فرائض منصبی میں جو انمردی کا مظاہرہ کر نیوالے سرمایہ افتخار ہیں، ڈی پی او

فرائض منصبی میں جو انمردی کا مظاہرہ کر نیوالے سرمایہ افتخار ہیں، ڈی پی او

  



ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ڈیرہ اسماعیل خان کیپٹن (ر) حافظ واحد محمود نے کہا ہے کہ پیشہ وارانہ فرائض منصبی میں جوانمردی کا مظاہرہ کرنے والے پولیس اہلکار فورس کا سرمایہ افتخار ہیں، خدمت عامہ اورامن و امان کا قیام ہر پولیس افسر کی اولین ترجیحات ہونی چاہیں، ہمارا کام عوام کو سہولت دینا ہے، اذیت نہیں۔ لہذا مثبت سوچ اپنا کر فیلڈ ڈیوٹی میں عوام کے مسائل حل کرانے میں کوئی کسر باقی نہ چھوڑی جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں بہترین پیشہ وارانہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے پولیس اہلکاروں کے لیے منعقدہ تقسیم انعاما ت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ڈی پی او نے کہا کہ پولیس فورس میں موجود خود احتسابی کا عمل اس بات کا تقاضا کرتی ہے کہ تمام رینک کے پولیس افسران و اہلکار ان محتاط رویہ اپناتے ہوئے اپنے فرائض پیشہ وارانہ تقاضوں اور عین وابستہ توقعات کے مطابق ادا کریں۔ انہوں نے خبر دار کیا کہ پولیس میں کرپشن، غیر قانونی حراست اور تشدد کو ہرگز برداشت نہیں کیاجائے گا۔ انہوں نے تقریب کے شرکاء پر زور دیا کہ عوامی خدمت کو اپنا شعار بنائیں اور تمام تر وابستگیوں اور معاشرتی تضادات سے بالا تر ہوکر اپنی توانائیاں صرف اور صرف انسدا د جرائم، امن و امان کے قیام اور عوام کو بلا امتیاز انصاف کی فراہمی کے لیے بروئے کار لائیں۔ فیلڈ ورک میں عوام کے ساتھ قریبی روابط استوار کریں اور شائستہ رویہ اپناتے ہوئے کسی بھی موقع پر صبر کا دامن ہاتھ سے نہ جانے دیں۔ تقریب کے دوران ضلعی پولیس سرابرہ کیپٹن(ر) واحد محمود نے ایمانداری و جانفشانی سے فرائض کی انجام دہی کے دوران نمایا کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے پولیس اہلکاروں میں نقد انعامات اور تعریفی اسناد تقسیم کیے۔ ڈی پی او نے کنسٹیبل اور ہیڈ کنسٹیبل کے تمام عہدوں کے تمام پولیس اہلکاروں میں انعامات تقسیم کرتے ہوئے ان کی بھرپور حوصلہ افزائی کی اور انہیں اس بات کا پابند کیا کہ پولیس فورس میں موجود سزا و جزاء کے عمل کو اس کی اصل روح کے مطابق عملی جامہ پہنانے ہوئے اچھی کارکردگی دکھانے والے تمام رینک کے پولیس افسران و اہلکاروں کی ہر فورم پر حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ جبکہ کام چور اور فرائض منصبی میں غفلت کا مظاہرہ کرنے والے پولیس افسران و اہلکاروں کو محکمہ سے نکال باہر کرکے ان کی حوصلہ شکنی کو یقینی بنایا جائے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر