تامل علاقہ اور ند کے 3ہزار ہندو دلتوں کا اسلام قبول کرنیکا فیصلہ 

تامل علاقہ اور ند کے 3ہزار ہندو دلتوں کا اسلام قبول کرنیکا فیصلہ 

  



کوئمبتور (آئی این پی) تامل ناڈو میں ٹامل پولیگل کچی کے ارکان اور ندور علاقہ کے رہنے والے ہندو دلتوں نے ان کے ساتھ نازیبا سلوک کرنے کی شکایت کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ وہ اسلام قبول کررہے ہیں۔  میتوپلائم میں تامل پولیگل کچی کے ریاستی سطح کے اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیاکہ علاقہ کے تمام تین ہزار دلت اپنا مذہب چھوڑ کر مسلمان ہوجائیں گے۔ تنظیم کے جنرل سکریٹری ایم ایلاوینل نے اجلاس کی صدارت کی۔ انہوں نے بتایا کہ ندور میں ایک دیوار منہدم ہوگئی تھی جس میں 17افراد ہلاک ہوگئے تھے لیکن مکان کے مالک شیواسبرامنیم کے خلاف مقدمہ درج نہیں کیا گیا۔ شیواسبرامنیم نے  دیوار کے سہارے کیلئے پلرز تعمیر نہیں کئے تھے اور اس کا مقصد دلتوں کو پریشان کرنا تھااور وہ اپنے مقصد میں کامیاب رہا،کئی ہلاکتیں ہو گئیں۔ اس واقعہ کے ذمہ دار افراد گرفتاری کے بعد 20دنوں میں رہا ہوگئے اہل علاقہ نے انصاف کیلئے جمہوری طرز پر احتجاج کیا تھا۔الٹا تنظیم کے سیکرٹری کو جیل بجھوا دیا گیا جس سے مذہب میں عدم مساوات کا اظہار ہوتا ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ ہندو مذہب میں دلتوں کے ساتھ براسلوک کیا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ان کی تنظیم کے ارکان نے ندور کے مقامی عوام کے ساتھ اسلام قبول کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پہلے مرحلہ میں 5 جنوری کو میتو پلائم میں 100افراد اسلام قبول کریں گے اور دیگر اضلاع میں یہ عمل مرحلہ وار انجام دیا جائے گا۔

اسلام قبول

مزید : صفحہ آخر