ایف آئی اے کاماڈل ٹاؤن میں ن لیگ کے مرکزی سیکریٹریٹ پر چھاپہ، ریکارڈ قبضے میں لے لیا

    ایف آئی اے کاماڈل ٹاؤن میں ن لیگ کے مرکزی سیکریٹریٹ پر چھاپہ، ریکارڈ قبضے ...

  



لاہور(کر ائم رپو رٹر) ایف آئی اے نے مسلم لیگ (ن) کے ماڈل ٹاؤن میں قائم مرکزی  سیکریٹریٹ پر چھاپہ مار کر ریکارڈ قبضے میں لے لیا ایف آئی اے کی چار رکنی ٹیم نے دفتر پر چھاپہ مارا جس میں ایک خاتون افسر بھی شامل تھیں مسلم لیگ (ن) کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل عطااللہ تارڑنے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایف آئی اے کی جانب سے یہ چھاپہ پاکستان مسلم لیگ(ن)کی نائب صدر مریم نواز کی جانب سے جج ارشد ملک کے حوالے سے کی گئی پریس کانفرنس سے متعلق مواد کے لیے مارا گیا۔عطااللہ تارڑنے کہا کہ جج ارشد ملک کے معاملے میں حکومت پارٹی بن گئی ہے حالانکہ ناصر بٹ نے لندن میں ہائی کمیشن کو متعدد مرتبہ مذکورہ ویڈیو کی تصدیق کرنے کی کوشش کی لیکن اس کو نہیں لیا گیا۔انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے خود کہا تھا کہ ارشد ملک نے عدلیہ کا سرشرم سے جھکادیا ہے۔عطااللہ تارڑ نے کہا کہ سابق ڈی جی ایف آئی اے نے غیرقانونی احکامات ماننے سے انکار کیا تھا، وزیراعظم عمران خان انتقامی سیاست پر اتر آئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ارشد ملک کے تمام تر حقائق روز روشن کی طرح عیاں ہیں، ارشد ملک کو تو آج تک کسی نے کچھ نہیں کہا، عمران احمد نیازی اور اس کی حکومت کا سارا زور مسلم لیگ(ن)پر چلتا ہے۔وزیراعظم عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان صاحب ہم ڈٹے ہوئے ہیں، آپ کی فسطائیت، آپ کی انتقامی کارروائیوں اور آپ کی فاشسٹ سوچ کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔عطااللہ تارڑنے ناصر بٹ کے حوالے سے ایک سوال پر کہا کہ ناصر بٹ نے یہ موقف لیا تھا کہ میں پاکستان میں آکر پیش ہونے کو تیار ہوں لیکن سیکیورٹی دی جائے، اب عمران خان صاحب وہاں ان کووارنٹ گرفتاری دے دیں لیکن ویڈیونہ لیجیے گا۔عطااللہ تارڑکا کہنا تھا کہ مجھے کل 11بجے کا نوٹس ہے اور میں پیش ہوں گا، کبھی اس چیز سے نہیں بھاگے اور پیش ہو کر اپنا بیان ڈٹ کر دیں گے۔ انہوں نے کیا کیا۔ایف آئی اے کے چھاپے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ہمارے یہاں ایک آئی ٹی روم ہے اور ہمارا ریکارڈ ہوتا ہے جہاں ہمارے آلات موجود ہیں، جس میں الیکشن اور سیاسی حوالے سے ہماری جو دستاویزات تھیں اس کی ہارڈ ڈرائیو لے کر گئے ہیں۔

چھاپہ

لاہور (این این آئی)مسلم لیگ (ن)کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ پر ایف آئی اے کے چھاپے پر آج بھرپور احتجاجی ریلی اورقانون کی دھجیاں اڑا کر چھاپے پر واجد ضیاء کے خلاف ڈکیتی کا مقدمہ درج کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ مسلم لیگ(ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہاہے کہ پارٹی سیکریٹریٹ پر ایف آئی اے کے چھاپے سے بشیر احمد میمن کی کہانی سچ ثابت ہوگئی ہے،سابق ڈی جی ایف آئی اے نے عمران صاحب کے دبا ؤمیں نہ آئے اور نالائق اور نااہل عمران صاحب کا آلہ کار بننے سے انکار کردیاتھا۔نوازشریف کے خلاف بدنام زمانہ ہیروں کو ہی پھر سے استعمال کرنے کا فیصلہ کیاگیا۔چھاپے سے ثابت ہوگیا کہ جج ارشد ملک کی وڈیو اصلی ہے،چھاپے سے یہ بھی ثابت ہوگیا کہ جج ارشد ملک نے دباؤ کے تحت نوازشریف کو سزا سنائی تھی۔مسلم لیگ (ن)کے مرکزی سیکریٹریٹ پر چھاپہ نالائق اور ناہل عمران صاحب کے کہنے پر مارا گیا،کرپشن کے جھوٹے مقدمات کے ثبوت نہیں مل رہے تو ایف آئی اے کو اب دباؤ کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے۔حکومت عدلیہ کے فیصلوں پر اپنا غصہ مسلم لیگ (ن)سیکریٹریٹ پر بلاجواز چھاپے مارکر نکال رہی ہے،عمران صاحب اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے ایک اور قومی ادارے کو سیاست میں الجھا رہے ہیں،جب نیب نیازی گٹھ جوڑ ناکام ہو رہا ہے اور عدالتوں میں ثبوت پیش نہیں ہو رہے تو ایف آئی کو استعمال کیا جا رہا ہے۔

مریم اورنگزیب

مزید : صفحہ اول


loading...