کالاباغ ڈیم ملک کی شہ رگ ہے، پاکستان کسان بورڈ

کالاباغ ڈیم ملک کی شہ رگ ہے، پاکستان کسان بورڈ

  



فیصل آباد (اے پی پی) پاکستان کسان بورڈ فیصل آباد کے قائد میاں ریحان الحق نے کہاہے کہ پاکستان میں 9 ملین ہیکٹر اراضی پانی نہ ہونے کے باعث بے کار پڑی ہے مگر ہر سال 35 ملین ایکڑ فٹ پانی کسی قسم کے استعمال میں لائے بغیر سمندر کی نظر ہو رہاہے جبکہ کالا باغ ڈیم بننے کے باعث سندھ کی 23لاکھ، پنجاب کی 19لاکھ، بلوچستان کی 10لاکھ،خیبر پختونخواہ کی 8 لاکھ ایکڑاضافی اراضی سیراب ہونے سے سندھ کو سالانہ 4.6 ارب ڈالر، پنجاب کو 3.6، خیبر پختونخواہ کو 1.6اور بلوچستان کو 2 ارب ڈالر کامزید معاشی فائدہ ہو گا نیز توانائی کے بحران سے بھی بڑی حد تک نجات ممکن ہو جائے گی اور سالانہ 3600میگاواٹ بجلی حاصل ہونے سے صارفین پر پڑنے والا اضافی مالی بوجھ بھی کم ہو گا اور پہلے 5سال کے دوران صارفین کو 2.50 روپے فی یونٹ جبکہ 5 سال کے بعد 1.40 روپے فی یونٹ کی پیداواری لاگت کے حساب سے انتہائی سستی بجلی دستیاب ہو گی۔ ایک ملاقات کے دوران انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم ایک خالصتاً تکنیکی مسئلہ ہے جسے نامعلوم طاقتوں کے اشارے پر سیاسی بنایاجارہاہے اور جن صوبوں کے بعض حلقوں کی جانب سے اس کی مخالفت کی جارہی ہے درحقیقت سب سے زیادہ فائدہ انہی صوبوں کو ہوگا اور سندھ و خیبر پختونخواہ کے بہت سے علاقے ہرسال ہونے والی سیلاب کی تباہ کاریوں سے بھی بچ جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم کے بننے کے بعد بجلی کی پیداواری لاگت میں حکومت کو سالانہ کم ا ز کم 4 ارب ڈالر کی بچت ہو گی۔ انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم ملک کی شہ رگ ہے اور جتنا پانی ہم ہرسال بغیر استعمال کئے سمندر میں پھینک رہے ہیں اس سے کالاباغ جیسے کم از کم 2 ڈیم بھر کر تمام سال اس سے فائدہ حاصل کیاجاسکتاہے۔ انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم میں ذخیرہ ہونے والے 7ملین ایکڑ فٹ پانی میں سے 2.6 ملین ایکڑ فٹ پانی صوبہ سندھ کے حصہ میں آئے گا جسے آبپاشی کیلئے استعمال میں لاکر سرسبز زرعی انقلاب لایا جاسکے گا۔انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم سے بلوچستان کے علاقوں ڈیرہ بگٹی، ڈیرہ مراد جمالی، جعفر آباد، سبی کو بھی وافر پانی ملے گا۔انہوں نے بتایاکہ خیبرپختونخواہ میں 8لاکھ ایکڑ ایسی اراضی موجود ہے جو دریائے سندھ کی سطح سے 100 سے 150 فٹ بلند ہے جسے صرف کالاباغ ڈیم کے ذریعے ہی آبپاش کیاجاسکتاہے۔ انہوں نے حکومت سے اپیل کی کہ وہ تمام سیاسی قائدین، صوبائی رہنماؤں، آبی ماہرین اور واٹر انجینئرز کی راؤنڈ ٹیبل کانفرنس منعقد کرے اور کالاباغ ڈیم کے ضمن میں تحفظات دور کرکے اس منصوبہ پر فوری عملدرآمد کے آغاز کو یقینی بنایا جائے۔

مزید : کامرس


loading...