سی این جی کی مسلسل بندش نے زندگی مفلوج بنا دی: حافظ نعیم الرحمن

      سی این جی کی مسلسل بندش نے زندگی مفلوج بنا دی: حافظ نعیم الرحمن

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کراچی سمیت سندھ بھر میں مسلسل پانچ روز گیس کی بندش اور اس کی وجہ سے ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی اورصنعتیں بند ہونے پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ سی این جی کی غیر معینہ بندش نے کراچی کے عوام کو شدید ذہنی وجسمانی اذیت کا شکار کردیا ہے۔گھروں اور کارخانوں میں گیس نہ ہونے کی وجہ سے شہری پریشانی کا شکار ہیں اور نوبت یہاں تک آگئی کہ گھروں میں لکڑیوں پر کھانا پکانے پر مجبور ہیں۔انہوں نے کہاکہ سوئی سدرن گیس کی نااہلی کا عالم یہ ہے کہ گیس بندش کا کوئی واضح شیڈول بھی جاری نہیں کیا جاتاجس کی وجہ سے پریشان حال عوام سی این جی اسٹیشنز پہنچ جاتے ہیں،محکمے کا یہ رویہ صارفین کے ساتھ بدترین مذاق ہے۔انہوں نے کہاکہ کراچی منی پاکستان اور معاشی حب ہے جو70فیصد ریونیو پیدا کرتاہے،گیس بندش کی وجہ سے تاجر اور صنعتکار طبقہ شدید متاثرہوا ہے جو کہ ملکی صنعتوں کے لیے نقصان دہ ہے جس کے باعث صنعتوں کو چلانا مشکل ہوجائے گا اور مشکلات سے دوچار صنعتوں کو مالکان بند کرنے پر مجبور ہوجائیں گے۔انہوں نے کہا کہ کراچی سمیت سندھ بھر میں سی این جی طویل بندش کے اعلان کے بعد پانچویں روز بھی سی این جی اسٹیشن بند ہونے سے شہرمیں پبلک ٹرانسپورٹ مکمل بند ہے، ٹرانسپورٹ غائب ہونے سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے،طلباء و طالبات کو تعلیمی اداروں میں پہنچنے میں دشواری کا سامناہے،شہر کے صنعتی علاقوں میں متعدد پیداواری ادارے پہلے سے ہی بند ہیں جبکہ گیس سے چلنے والی سینکڑوں صنعتوں کا پہیہ بھی رک گیا ہے،ہزاروں مزدور بے ر وزگار ہوگئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ سڑکوں پر پبلک ٹرانسپورٹ نہ ہونے کی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے، ڈھائی کروڑ   شہریوں کے لیے پہلے ہی ٹرانسپورٹ نہ ہونے کے برابر اور دوسری جانب گیس بندش کی وجہ سے پرائیویٹ ٹرانسپورٹ بھی متاثر ہورہی ہے، عوام بسوں کی چھتوں پر سفر کرنے پر مجبور ہیں اور بس اسٹاپ پر عوام کا رش بڑھتا جارہا ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ حکومت کو چاہیئے کہ متعلقہ اداروں کے نا اہل ذمہ داران کے خلاف فی الفور کارروائی کرے ورنہ جماعت اسلامی شہریوں کے ساتھ مل کر احتجاج کرنے پر مجبور ہوگی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...