خاتون سمیت2افراد قتل، حادثات میں 3جاں بحق ہوگئے

خاتون سمیت2افراد قتل، حادثات میں 3جاں بحق ہوگئے

  



ملتان،اڈا پل14رحیم یارخان (وقائع نگار، نمائندہ پاکستان) خاتون سمیت2افراد کو قتل کردیاگیا حادثا ت میں 3افراد جاں بحق ہوگئے ایمبولینس نہ پہنچنے پرنوجوان چل بسا جبکہ نشئی کی لاش برآمد ہوئی تفصیل کے مطابق الپہ پولیس کیعلاقے میں شوہر کے مبینہ تشدد سے بیوی جاں بحق  ہوگئی لواحقین نے پولیس لائن کے سامنے لاش رکھ کر احتجاجی مظاہرہ کیا تفصیل کے مطابق متی تل کے رہائشی محمد شریف نے(بقیہ نمبر47صفحہ7پر)

 اپنے رشتہ داروں اور علاقے کے لوگوں کے ہمراہ پولیس لائن کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا محمد شریف کا کہنا ہے کہ اس کی ہمشیرہ بھراواں مائی کو اس کے شوہر محمد صادق نے تشدد کرکے اسے قتل کر دیا ہے پولیس ملزم کے خلاف کے کارروائی نہیں کر رہی ایس ایس پی رب نواز تلہ نے موقع پر پہنچ کر مظاہرین سے مذاکرات کئے اور انہیں انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی کروائی جس پر احتجاج ختم کر دیا گیاجبکہ آٹھنگل چوک کے قریب تیزرفتار ٹرالی نامعلوم موٹرسائیکل سوار سے ٹکرا گئی،جس سے وہ شدید زخمی ہوگیا جو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی زندگی کی بازی ہارگیا جبکہ ٹرالی ڈرائیور موقع سے فرار ہوگیا،واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر نعش تحویل میں لیکر نشتر ہسپتال کے سرد منتقل کرنے کے بعد ٹریکٹر ٹرالی ڈرائیور کے خلاف کارروائی شروع کردی ہے، تاہم مرنے والے کی کوئی شناخت نہ ہوسکی ہے۔ادھرممتاز آباد پولیس کے  علاقے یعقوب ٹاون سے ایک شخص کی لاش ملی ہے جسے پولیس نے قبضہ میں لے لیا ہے پولیس کا کہنا ہے کہ جاں بحق ہونے والے کی عمر 17 سال ہے اور وہ نشے کا عادی تھا اس کی موت طبعی ہے۔ممتاز آباد پولیس کے  علاقے میں رکشہ کی ٹکر سے بچی جاں بحق ہوگئی تفصیل کے مطابق فاطمہ جناح ٹاون کے قریب محمد اشرف کی بیٹی امیمہ سڑک پار کر رہی تھی کہ اسے رکشہ نے ٹکر ماردی جس سے وہ جاں بحق ہوگئی اس کی عمر چار سال تھی واقع کی اطلاع پر پولیس موقع پر پہنچ گئی اور تفتیش شرو ع کر دی۔دریں اثنائممتاز آباد پولیس کے  علاقے میں رکشہ کی ٹکر سے بچی جاں بحق ہوگئی تفصیل کے مطابق فاطمہ جناح ٹاون کے قریب محمد اشرف کی بیٹی امیمہ سڑک پار کر رہی تھی کہ اسے رکشہ نے ٹکر ماردی جس سے وہ جاں بحق ہوگئی اس کی عمر چار سال تھی واقع کی اطلاع پر پولیس موقع پر پہنچ گئی اور تفتیش شرو ع کر دی۔ ریسکیو آفس میں عملہ تعینات عملہ نیڈیوٹی سے غائب رہنا معمول بنا لیں گزشتہ روز جہانیاں کی نواحی بستی نیلوٹ سے جہانیاں ریسکیو 1122 کو کال کی گئی کہ مہربانی کریں ایمبولینس بھجوا دیں کہ ایک نوجوان مریض کی سینے میں شدید درد کی وجہ سے حالت بہت خراب ہورہی ہے ریسکیو اہلکار جواب دیتے ہیں کہ یہ ادارہ جہانیاں میں فنکشنل نہیں ہے اور?یزل بھی نہیں ہے اس لیے نہیں آ سکتے مریض رات 2 سے صبح 4 بجے تک تکلیف جھیلتا رہا آخرکار ورثاء  نے موٹر سائیکل پہ بٹھا کر نوجوان شہزاد کو اسپتال کی طرف روانہ ہو? صبح  5 بجے کے قریب بستی رحیم شاہ کے پاس پہنچے تھے کہ مریض کی حالت غیر ہو گئی چیخ و پکار پر سڑک کنارے موجود گھروں سے لوگ آ? اور مریض کو جب چارپائی پر لٹایا تو نوجوان کی جان کی بازی ہار چکا تھانوجوان شہزاد والدین کا اکلوتا بیٹا اور دو بچوں کا باپ تھا ریسیکو آفس جہانیاں عملہ اور ایمبولینس کی دستیابی کے باجود ریسکیو اہلکاروں نیڈیوٹی سے غائب رہنا معمول بنا لیا ہے ایمرجنسی کی صورت میں کال کرنے والوں صرف فون پر ہی جواب دے دیا جاتاہے اگر آفس فنکشنل نہیں ہے تو تعینات عملہ کیا کررہا ہے فارغ بیٹھ کر تخواہیں وصول کررہے ہے شہریوں نے وزیراعلی پنجاب, چئیرمین ریسکیو ڈی سی خانیوال سے واقعہ کی انکوئری کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔ادھرتحصیل صادق آباد بسم اللہ پور کا رہائشی شاہ نواز جوکہ باغ میں چوکیدار تھا‘ ڈیوٹی کے بعد اپنے گھر واپس جارہا تھا کہ نامعلوم موٹرسائیکل سوار ملزمان نے فائرنگ کردی۔ زد میں آکر شاہ نواز موقع پر ہی دم توڑگیا۔ اطلاع پاکر متعلقہ پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاش تحویل میں لے کر پوسٹ مارٹم کیلئے تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال منتقل کردی۔ ترجمان پولیس کے مطابق یہ واقعہ ذاتی دشمنی کا لگتا ہے‘ پولیس ٹیم نے موقع پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کرکے کاررو ائی شروع کردی ہے‘ جلد نامعلوم ملزمان کا سراغ لگا لیاجائے گا۔علاوہ ازیں کوٹ سمابہ کا رہائشی 40سالہ لیاقت علی جوکہ اپنی موٹرسائیکل پر سو ار ہوکر جارہا تھا کہ تیز رفتاری کے باعث آگے جانے و الے موٹرسائیکل سے ٹکرا گیا اور سر کے بل سڑک پر جاگرا جس کے نتیجہ میں وہ شدید زخمی ہوگیا۔ ورثاء نے طبی امداد کیلئے شیخ زاید ہسپتال منتقل کیاجہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہوپایا اور دم توڑ گیا۔ جبکہ مختلف حادثات میں زخمی ہونیوالے 66افرادجن میں ظفر آباد کالونی کا رہائشی 7سالہ محمدعمیر‘ چک 116کا 10سالہ محمدحماد‘ چوک بہادر پور کا 9سالہ محمداسامہ‘ ٹبی لاڑاں کا 10سالہ محمدعامر‘ میر پور ماتھیلو کا 5سالہ محمدراشد‘ ظفر آباد کالونی کا 7سالہ محمدعمیر‘ راجن پور کی 30سالہ ثمینہ بی بی‘ نورے و الی کی 50سالہ نسرین بی بی‘ اقبال آباد کی 55سالہ نذیراں مائی‘ چک عباس کا 70سالہ فدا حسین ا ور ہسپتال روڈ کا رہائشی 60سالہ روحیل خان وغیرہ کو ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔

قتل،حادثات

مزید : ملتان صفحہ آخر