حکومت کا 89 ادویات کی قیمت کم کرنے کا اعلان لیکن آگے سے پاکستان میڈیکل ایسوی ایشن نے ایسا اعلان کر دیا کہ سن کر پاکستانیوں کی آنکھیں بھی کھلی کی کھلی رہ جائیں گی

حکومت کا 89 ادویات کی قیمت کم کرنے کا اعلان لیکن آگے سے پاکستان میڈیکل ایسوی ...
حکومت کا 89 ادویات کی قیمت کم کرنے کا اعلان لیکن آگے سے پاکستان میڈیکل ایسوی ایشن نے ایسا اعلان کر دیا کہ سن کر پاکستانیوں کی آنکھیں بھی کھلی کی کھلی رہ جائیں گی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے کہاہے کہ حکومت وفاقی کابینہ کی جانب سے 89 ادویات کی قیمتوں میں کمی کا دعویٰ کر کے قوم کو گمراہ کر رہی ہے ۔

ڈان نیوز کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے الزام عائد کیا ہے کہ وزارت قومی صحت 24 دسمبر کو ہونے والے اجلاس میں وفاقی کابینہ کی جانب سے 89 ادویات کی قیمتوں میں کمی کا دعویٰ کرکے قوم کو گمراہ کررہی ہے۔ڈاکٹروں کی نمائندہ تنظیم نے کا کہنا ہے کہ یہ 6 ماہ پرانا فیصلہ تھا جس کا اعلان وفاقی کابینہ کے حالیہ اجلاس کے بعد دوبارہ کیا گیا۔اس حوالے سے پی ایم اے نے وزارت قومی صحت سے جاری 19 جون کا ایک نوٹی فکیشن بھی شیئر کیا جس میں ادویات ساز کمپنیوں کو 89 ادویات کی قیمتوں میں کمی کی ہدایت کی گئی تھی۔

تاہم وزارت قومی صحت نے اس الزام کو مسترد کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ 6 ماہ قبل ادویات کی قیمتوں میں کمی سے متعلق صرف ایک ایڈوائزری جاری کی گئی تھی اور اب آخر کار حکومت نے قیمتوں میں کمی کا فیصلہ کیا۔واضح رہے کہ 24 دسمبر کو وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ وفاقی کابینہ نے 89 ادویات کی قیمتوں میں 15 فیصد تک کمی کا فیصلہ کیا ہے۔

اس حوالے سے جاری ایک بیان میں پی ایم اے نے کہا کہ انہیں معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اور معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کی جانب سے کابینہ اجلاس کے بعد ایک پریس کانفرنس کے ذریعے 89 ادویات کی قیمتوں میں 15فیصد تک کمی کے نوٹی فکیشن سے متعلق جان کر دھچکا لگا تھا۔پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے کہا کہ حکومت کی جانب سے 19 جون کو ایسا ہی نوٹی فکیشن جاری کیا گیا تھا جس پرعملدرآمد نہیں ہوا تھا۔پی ایم اے نے مزید کہا کہ یہ بات بھی علم میں آئی ہے کہ کئی ضروری ادویات یا تو مارکیٹ میں دستیاب نہیں ہیں یا ان کی فراہمی میں کمی ہے۔

مزید : قومی


loading...