حکمران کا ایماندارکے ساتھ ساتھ تجربہ کار ہونا بھی ضروری ہے: چودھری پرویز الٰہی

حکمران کا ایماندارکے ساتھ ساتھ تجربہ کار ہونا بھی ضروری ہے: چودھری پرویز ...
حکمران کا ایماندارکے ساتھ ساتھ تجربہ کار ہونا بھی ضروری ہے: چودھری پرویز الٰہی

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی نےکہاہےکہ حکمران کا ایماندارکے ساتھ ساتھ تجربہ کار ہونا بھی ضروری ہے،نئی حکومت کوابھی تھوڑا عرصہ ہوا ہے، کچھ وقت دیں نئے تجر بوں کے اثرات آپ کو بھی پتہ چل جائیں گے اورہمیں بھی، نئی حکومت پرقرضوں کا بہت بوجھ پڑا ہے،عدالتیں آزاد ہیں ہمیں عدالتوں کے فیصلوں پر نہیں بولنا چاہیے جس کو عدالتوں سے ریلیف ملتا ہے وہ اس کا حق ہے۔

لاہور میں تقر یب سے خطاب کے دوران چوہدری پرویز الٰہی نے کہا کہ ہم نے اپنے دورمیں بچوں کی تعلیم پر بہت زور دیا، اپنے دورحکومت میں طلبا کو سہولتیں دیں،سب سے پہلے پنجاب میں آئی ٹی کا محکمہ ہمارے دورحکومت میں شروع ہوا۔ انہوں نے کہا کہ ہم کام کرتے ہیں لیکن ڈھول نہیں بجاتے، سوچا تھا کہ ایسے کام کروں جس میں انسانیت کی بھلائی ہو،  حکمران کا ایماندار کے ساتھ ساتھ تجربہ کار ہونا بھی ضروری ہے جب میں کونسلر بنا تو مجھے بہت تجربات ہوئے، حادثے کے دوران جب کوئی زخمی ہوتا تو اٹھانے والا کوئی نہ ہوتا، اس تجربے کودیکھتےہوئے ریسکیو سروس کاآغازکیا،دل کےمریضوں کی تکالیف کودیکھتےہوئے کئی پی آئی سی بنوائے۔اُنہوں نے کہا کہ ہم پکڑتے ہیں تو پوچھا جاتا ہے، پکڑا کیوں؟ ہم چھوڑتے ہیں تو کہتے ہیں، چھوڑا کیوں؟ عدالتیں علاج کیلئے باہر بھیجتی ہیں تو کہا جاتا ہے باہر کیوں بھیجا؟ عدالتیں آزاد ہیں ہمیں عدالتوں کے فیصلوں پر نہیں بولنا چاہیے، حکمران کا ایماندارکے ساتھ ساتھ تجربہ کار ہونا بھی ضروری ہے، نئی حکومت پرقرضوں کا بہت بوجھ پڑا ہے، لمحہ فکریہ ہے کہ جب شہبازشریف گئے تو صوبہ 2 ہزارکا مقروض تھا۔

مزید : قومی


loading...