جنریٹرز کی درآمدات میں 6.3فیصد اضافہ

جنریٹرز کی درآمدات میں 6.3فیصد اضافہ

اسلام آباد (اے پی پی) رواں مالی سال کے پہلے سات ماہ کے دوران گذشتہ مالی سال کے مقابلہ میں جنریٹرز کی ملکی درآمدات میں 6.3فیصد کا اضافہ ہوا ہے جبکہ دسمبر2013ءکے مقابلہ میں جنوری 2014ءکے دوران جنریٹروں کی درآمدات 199.4ملین ڈالر تک بڑھ گئیں۔

پاکستان مشینری امپورٹرز گروپ کی رپورٹس کے مطابق دسمبر2013ءکے دوران 116 ملین ڈالر کے جنریٹر درآمد کئے گئے تھے جبکہ ماہ جنوری 2013ءکے دوران جنریٹروں کی ملکی درآمدات کا حجم صرف95 ملین ڈالر تھا۔ رواں مالی سال میں جولائی تا جنوری 2013-14ءکے دوران 643.5 ملین ڈالر کے جنریٹرز درآمد کئے گئے ہیں جبکہ گذشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران جنریٹرز کی ملکی درآمدات کا حجم 605ملین ڈالر تھا۔ پاکستان مشینری امپورٹرز گروپ کے صدر خرم سہگل نے کہا ہے کہ حکومت آئندہ گرمیوں کے دوران بجلی کی لوڈ شیڈنگ پر قابو پانے پر انتہائی پرعزم ہے تاہم درآمد کنندگان نے گرمیوں کے دوران مقامی طلب کو پورا کرنے کےلئے درآمدات کی ہیں کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ شاید گرمیوں میں بجلی کی قلت پر قابو نہ پایا جاسکے اس صورتحال کے پیش نظر درآمدات کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جنوری میں درآمدات میں ہونے والا اضافہ اپریل سے شروع ہونے والے سیزن کے پیش نظر ہے جو جولائی تک جاری رہے گا۔ انہوں نے کہاکہ بعض کمپنیوں نے اپنے آرڈرز کی تکمیل کےلئے زیادہ درآمدات کی ہیں۔ ادارہ برائے شماریات پاکستان (پی بی ایس) کے اعدادوشمار کے مطابق مالی سال 2010-11ءکے دوران جنریٹرز کی ملکی درآمدات1.038 ارب ڈالر تھیں جو مالی سال 2011-12ءمیں1.039 ارب ڈالر رہیں جبکہ گذشتہ مالی سال 2012-13ءکے دوران درآمدات977.4 ملین ڈالر تک کم ہوگئیں۔ پاکستان میں ایک تا10 کے وی اے کے جنریٹرز کا درآمدات میں حصہ 40فیصد ہے جو گھریلو صارفین اورچھوٹے تجارتی اداروں کی ضروریات کےلئے درآمد کئے جاتے ہیں۔

مزید : کامرس