آسٹریا،یہودی تنظیم نے دستاویزی فلم  میں اسرائیلی جنگی جرائم کو بے نقاب کردیا

 آسٹریا،یہودی تنظیم نے دستاویزی فلم  میں اسرائیلی جنگی جرائم کو بے نقاب ...

  ویانا (این این آئی)آسٹریا میں یہودی انسانی حقوق گروپ کی جانب سے ریلیز کی گئی دستاویزی فلم میں فلسطینیوں کیخلاف اسرائیل کے مبینہ جنگی جرائم کو بے نقاب کیا گیا ہے۔ آسٹریا میں اسرائیل مخالف کسی یہودی گروپ کی جانب سے جاری یہ پہلی دستاویزی فلم ہے۔اطلاعات کے مطابق آسٹریا کی غیرسرکاری تنظیم’ویمن ان بلیک‘ کی جانب سے یہ دستاویزی فلم گزشتہ روز جاری کی گئی۔’روڈ کے اس پار‘ کے نام سے جاری فلم کی پروڈیوسر لیا ٹراچانسکی ایک یہودی خاتون ہیں۔ a انہوں نے دستاویزی فلم میں اسرائیل کے فلسطینیوں کے خلاف مظالم کو نہایت بے باکی سے پیش کرتے ہوئے صہیونی ریاست کی سیاہ تاریخ پر روشنی ڈالی ہے۔دستاویزی فلم میں کہا گیا ہے کہ 1948 ء میں قیام اسرائیل کے بعد سے اب تک صہیونی ریاست کی تاریخ کا ہر دن ایک سیاہ باب ہے۔ اسرائیلی اور اور غیرسرکاری مسلح یہودیوں کے ہاتھوں فلسطینیوں کی ہنستی بستی بستیوں ،قصبوں، دیہاتوں اور شہروں کو نیست ونابود کر دیا گیا اور ہزاروں فلسطینیوں کو جان سے مارنے کیساتھ ساتھ لاکھوں کو ان کے وطن اور گھر بار، جائیداد اور املاک سے محروم کر دیا گیا۔دستاویزی فلم میں قیام اسرائیل کے بعد سے اب تک کے اہم واقعات کو سلسلہ وار دکھایا گیا ہے۔ فلسطین میں اسرائیلی ریاست کے قیام کے وقت فلسطینیوں پر ڈھائے جانیوالے مظالم 1967 ء کی جنگ اور اس میں مزید فلسطینی علاقوں پرقبضے کے بارے میں تفصیلات کیساتھ ساتھ بتایا گیا ہے کہ اسرائیلیوں کے ہاتھوں پچھلے 67 برسوں میں ہزاروں انسانیت سوز مظالم کا ارتکاب کیا گیا۔ ان میں فلسطینیوں کا اجتماعی قتل عام اور بستیوں میں لوٹ مار بھی شامل ہے۔ 

مزید : عالمی منظر