اسرائیل‘چار فلسطینی خواتین کے قبلہ اول میں داخلے پرپابندی عائد کردی مقبوضہ

 اسرائیل‘چار فلسطینی خواتین کے قبلہ اول میں داخلے پرپابندی عائد کردی مقبوضہ

 بیت المقدس (این این آئی)اسرائیل کی نام نہاد مجسٹریٹ عدالت نے اپنے فیصلے میں چار فلسطینی خواتین کے قبلہ اول میں داخلے پرپابندی عائد کرتے ہوئے ان پر بھاری جرمانے بھی عائد کیے ہیں۔ ان چاروں خواتین کو صہیونی پولیس نے دو روز پیشتر مسجد اقصیٰ سے باہر نکلتے ہوئے حراست میں لے لیا تھا۔اطلاعات کے مطابق اسرائیلی عدالت کی جانب سے مسجد اقصیٰ میں داخلے پر پاپندی کا سامنا کرنے والی خواتین میں رمزی کتیلات نامی خاتون بھی شامل ہے جو ’’القدس ہمارا، برائے انسانی حقوق ‘‘ نامی ایک فلاحی ادارے کی سربراہ ہیں۔ذرائع کے مطابق 48 سالہ لطیفہ مخمیر حراست میں لئے جانے کے بعد اچانک بیمار ہوگئی۔ لیکن اس کے علاج معالجے کے بجائے صہیونی حکام نے اسے مسلسل سردی میں رکھا اور اسپتال لے جانے کے بجائے اسے عدالت میں پیش کیا گیا۔صہیونی عدالت کی جانب سے خدیجہ خویص کو ایک ماہ کے لیے مسجد اقصیٰ میں روکے جانے کے ساتھ 1500 شیکل جرمانہ کیا گیا ہے۔ جہاد الغزاوی کے قبلہ اول میں داخلے پر 10 دن کیلئے پابندی عائد کی گئی ہے اور اسے 1000 شیکل جرمانہ کیا گیا ہے لطیفہ مخیمر اور دوسری خواتین کو بھی اسی نوعیت کی جرمانے اور سزائیں سنائی گئی ہیں۔

مزید : عالمی منظر