داعش کا عراق کی ثقافت پر خوفناک حملہ،ناقابل تلافی نقصان

داعش کا عراق کی ثقافت پر خوفناک حملہ،ناقابل تلافی نقصان
داعش کا عراق کی ثقافت پر خوفناک حملہ،ناقابل تلافی نقصان

  


بغداد (نیوز ڈیسک) عراق کے شہر موصل میں تاریخی لائبریری کی تباہی کے بعد داعش نے ہزاروں سال پرانے نوادرات رکھنے والے نینوا میوزیم کو بھی تباہ کر دیا ہے اور اس میں موجود قرون اولیٰ اور قرون وسطیٰ کے سینکڑوں نوادرات کو ریزہ ریزہ کر دیا ہے۔

کیا آپ کو معلوم ہے ہاتھی 20کلومیٹر کے فاصلے سے ایک دوسرے سے گفتگو کرسکتے ہیں؟یہ کیسے ممکن ہوتاہے ،جانئے

داعش کے جنگجو ہتھوڑوں سے لیس ہو کر میوزیم پر حملہ آور ہوئے اور اس میں موجود قدیم مجسموں، قدیم عراق سے منسوب ہتھیاروں، کاشتکاری کے آلات اور دیگر نوادرات کو بے حسی کے ساتھ ٹکڑوں میں تبدیل کر دیا۔ تباہ کئے گئے نوادرات میں 900 سال قبل مسیح کی بابل و نینوا کی تہذیب سے تعلق رکھنے والا ایک مجسمہ بھی شامل تھا جو کہ اڑنے والے بچھڑے کی شکل میں بنایاگیا تھا۔

داعش سے متعلق ایک ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر اس تباہی کی ویڈیو بھی جاری کی گئی ہے جس میں ایک باریش شخص یہ کہتے ہوئے نظر آتا ہے کہ میوزیم میں موجود نوادرات اور خصوصاً مجسموں کو اس لئے تباہ کیا گیا کہ یہ بت پرستی کی طرف رغبت کا باعث تھے۔ مقامی میڈیا کے مطابق داعش کے جنگجو اس سے پہلے متعدد تاریخی اور مقدس مقامات اور مزارات کو بھی تباہ کر چکے ہیں کیونکہ وہ انہیں اپنی شریعت کے خلاف سمجھتے ہیں۔ داعش پر قیمتی نوادرات چوری کر کے فروخت کرنے کا الزام بھی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس