ای پارلیمنٹ سسٹم کو پارلیمانی تاریخ میں پہلی بار نافذ کیا گیا ،مشتاق احمد غنی

ای پارلیمنٹ سسٹم کو پارلیمانی تاریخ میں پہلی بار نافذ کیا گیا ،مشتاق احمد غنی

  

پشاور(صوبائی اسمبلی)ای پارلیمنٹ سسٹم خیبرپختونخوااسمبلی کا ایک غیر معمولی اور قابل ذکروقابل فخرآغاز ہے۔اس طریقہ کارسے نہ صرف ممبران اسمبلی کی قانون سازی بلکہ پارلیمانی خدمات کی صلاحیت بھی بڑھے گی اور وہ بہتر(بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

طریقے سے قانون سازی کر سکیں گے ۔ان خیالات کااظہار سپیکر صوبائی اسمبلی مشتاق احمد غنی نے آج صوبائی اسمبلی سیکرٹریٹ میں مقامی این جی او بلیووینزاور آسٹریلین حکومت کے تعاؤن سے ممبران صوبائی اسمبلی کو فراہم کردہ لیپ ٹاپ کی تقسیم کے پروگرام سے خطاب کے دوران کیا ۔اس موقع پر ڈپٹی سپیکر محمودجان خان،اپوزیشن لیڈراکرم خان درانی ،پارلیمانی لیڈران شیر اعظم خان وزیر ،عنایت اللہ خان ،ثوبیہ شاہد، وومن کاکس کی چیئر مین ملیحہ اصغر خان بھی موجودتھے۔سپیکر مشتاق احمد غنی نے کہا کہ باہر کی دنیامیں ہمارے ملک اور خاص کر ہمارے اس صوبے کو بہت پسماندہ تصورکیا جاتاہے مگرصوبہ خیبرپختونخواکی اسمبلی نے ثابت کیا کہ ہم ملک میں سب سے بہترین ہیں ۔ہماری اسمبلی نے ای پارلیمنٹ سسٹم کو پارلیمانی تاریخ میں پہلی بارنافذکیا ۔اس نظام سے نہ صرف کاغذکے بے جااستعمال پر قابو پایاگیا بلکہ اس سے ممبران اسمبلی اور سٹاف کی انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ساتھ دلچسپی بڑھی اوران کے استعداد کارمیں اضافہ ہوا ۔انہوں نے ممبران اسمبلی کو لیپ ٹاپ تقسیم کے حوالے سے آسٹریلین حکومت اور مقامی این جی او کی کاؤشوں کو سراہا اور کہا کہ اس طرح کی کوششوں سے ای پارلیمنٹ سسٹم مضبوط ہو گا۔انہوں نے مزید کہا کہ ہماری کوشش اور خواہش ہے کہ ای گورننس سسٹم کو وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ ،گورنر ہاؤس اور دیگر اہم محکموں تک توسیع دی جائے ۔انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ حال ہی میں بلوچستان اسمبلی نے اس خواہش کا اظہار کیا ہے کہ بلوچستا ن اسمبلی میں بھی خیبرپختونخوااسمبلی کی طرز پر ای پارلیمنٹ سسٹم نافذکیاجائے ،جو کہ ہمارے لئے اعزازکی بات ہے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -