انشورنس سیکٹر کی ترقی، انقلابی اقدامات پر غور شروع، جلد اہم فیصلے

انشورنس سیکٹر کی ترقی، انقلابی اقدامات پر غور شروع، جلد اہم فیصلے

  

ملتان (نیوز رپورٹر) سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان نے انشورنس سیکٹر کی ترقی اور ملک میں انشورنس کے رجحان میں اضافہ کیلئے، سٹکچرل اصلاحات متعارف کروانے پر غور شروع کر دیا ہے۔ انشورنس سیکٹر کی ڈویلپمنٹ کے لئے جامع منصوبہ نجی اور سرکاری سیکٹر سے مشاورت(بقیہ نمبر42صفحہ12پر )

کے ساتھ تیار کیا جائے گا۔ دنیا میں ہونے والی معاشرتی، سماجی اور ٹیکنالوجیکل تبدیلیوں کے تناظر میں انشورنس سیکٹر میں تیزی سے تبدیلی آ رہی ہے۔جدید ٹیکنالوجی کے حامل ڈسٹری بیوشن چینل اور بینکا انشورس کی وجہ سے لائف انشورنس کے رجحان میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔ تاہم پاکستانمیں انشورنس اندسٹری کا حصہ قدرے کم ہے۔جی ڈی پی میں میں بیمہ کا حصہ ایک فیصد سے بھی کم ہے اورفی کس انشورنس کا شئیر 14.27ڈالر ہے جو کہ علاقائی ممالک کی نسبت کافی کم ہے انشورنس سیکٹر کی مارکیٹ ڈویلپمنٹ اور ترقی میں معاون پالیسیوں کی تیاری کے لئے ایس ای سی پی کے انشورنس ڈویڑن کی تنظیم نو کر دی گئی ہے انشورنس ڈویڑن میں تین خودمختار محکمے تشکیل دئے گئے ہیں جن میں سپرویڑن، انفورسمنٹ اور مارکیٹ ڈویلپمنٹ اینڈ پالیسی ریگولیشنز ڈیپارٹمنٹ شامل ہیں۔ ان محکموں کے مقاصد انشورنس کی کمپنیوں کے لئے ریگولیشنز، کمپنیوں کی نگرانی اور سپرویڑن، اینٹی منی لانڈرنگ اور ٹیرارزم کی مالی معاونت کی روک تھام کے ریگولیشنز، بیمہ کاروں کا تحفظ اور انشورنس مارکیٹ کی ترقی کے اقدامات کرنا ہیں۔ مزید ازاں، ایس ای سی پی کے انشورنس ڈویڑن کے ملازمین کی اہلیت بڑھانے کے لئے تربیتی پروگرام بھی شروع کیا جائے گا اور ملازمین کی حواصہ افزائی کی جائے گی ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -