دفاعی ادرے حملے سے غافل کیوں رہے ؟پارلیمنٹ میں آکر جواب دیں ،مولانا فضل الرحمن

دفاعی ادرے حملے سے غافل کیوں رہے ؟پارلیمنٹ میں آکر جواب دیں ،مولانا فضل ...

  

کراچی (سٹاف رپورٹر،آن لائن)جمعیت علماء اسلام (ف)کے امیر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ملکی دفاعی قوتیں چوکس ہو کر ملکی سرحدوں کی حفاظت کریں ، قوم آپ کے شانہ بشانہ کھڑی ہے ،ہمارے دفاعی ادارے بھارتی فضائی حملے سے کیوں غافل رہے ؟ قومی سلامتی کے ادارے پارلیمنٹ میں آکر جواب دیں ،فوری پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلا یا جائے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ اسلامیہ لاڑکانہ دودائی روڈ میں ختم بخاری کی پروقار تقریب سے خطاب کے دوران کیا ، اس موقع پر مولانا امجد خان ، مولانا راشد محمود سومرو ، محمد اسلم غوری ،مولانا عبدالقیوم ہالیجوی، علامہ ناصر خالد محمود سومرو ، مولانا عبداللہ مہر سومرانی، محمد اسلم غوری، عبدالرزاق عابد لاکھو، مولانا عبداللہ جرارپہوڑ، مولانا رمضان پھلپوٹو، سمیع سواتی،حذیفہ شاکر،مولانا محبت کھوڑو و دیگر بھی موجود تھے۔اس موقع پر مولانا فضل الرحمن نے تقریب میں 51 علماء کرام اور 57 حفاظ کرام کی دستار دستاربندی کی،مولانا فضل الرحمن نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں دعا گو ہوں کہ مشکل کی اس گھڑی میں اللہ پاک ملک کی سلامتی کی دفاعی اداروں کو ملکی سالمیت کی حفاظت کرنے کی توفیق عطا کرے، جمعیت علماء اسلام کا ایک ایک کارکن وطن عزیز پر جان قربان کیلئے ہمہ وقت تیار ہیں اور پاک فوج کے شانہ بشانہ ہیں ۔ جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے ہندوستان کی جانب سے رات کی تاریکی میں کئے گئے جارحانہ حملے کو بزدلانہ عمل قرار دیتے ہوئے اسے باعث شرم قرار دیا انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ و دیگر بین الاقوامی ادارے اور ان کے قوانین کہاں ہیں ، ہمارے دفاعی ادارے ہوائی حملے سے کیوں غافل رہے، فی الفور پارلیمنٹ کا ان کیمرہ اجلاس بلایا جائے اور قومی سلامتی کے ادارے پارلیمنٹ میں آکر جواب دیں۔ مولانا فضل الرحمٰن نے مزید کہا کہ جمیعت علماء4 اسلام اور متحدہ مجلس عمل کی جانب سے ملین مارچ کا سلسلہ جاری ہے، 28 مارچ کو ڈیرہ مراد جمالی میں ناموس رسالت ملین مارچ میں بلوچستان سے لاکھوں لوگ شریک ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ ملین مارچ کا مقصد پاکستان کی اسلامی نظریات کا تحفظ کرنا ہے، اسلامی نظریات کی شہ رگ کو کاٹنے والے حکمرانوں کے ہاتھ کاٹ دینگے، مولانا فضل الرحمٰن نے فارغ التحصیل علماء4 اور حفاظ کرام کو مبارکباد بھی پیش کی۔#

مولانا فضل الرحمان

مزید :

صفحہ آخر -