فضائی آلودگی سے بچاؤ کی خاطر ایل این جی کی مانگ میں تیزی سے اضافہ

فضائی آلودگی سے بچاؤ کی خاطر ایل این جی کی مانگ میں تیزی سے اضافہ

  

لاہور(پ ر) برِّاعظم ایشیاء میں آلودگی سے پاک ایندھن کے فوائد سے متعلق آگاہی میں اضافہ ہونے کے باعث، سال 2018 سے لیکوئیفائیڈ نیچرل گیس (ایل این جی) کی مانگ اور استعمال میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔بین الاقوامی ادارہ - شیل کی حالیہ تحقیق کے مطابق ؛ عالمی سطح پر بھی ایل این جی کی کی طلب دو کروڑ ستّر لاکھ ٹن سے بڑھ کر اکتّیس کروڑ نوّے لاکھ ٹن تک پہنچ چکی ہے۔ شیل کی توقعات کے مطابق، سنہء 2020 تک یہ طلب مزید بڑھ کر اڑتیس کروڑ چالیس لاکھ ٹن تک پہنچ جائے گی۔ 2019 کے دوران دنیا بھر میں ایل این جی کی فراہم کردہ مقدار میں تین کروڑ پچاس لاکھ ٹن کا اضافہ ہونے کی امیدہے۔

یہ تمام تر اضافی مقدار یورپ اور ایشیاء میں استعمال ہونا متوقع ہے۔ سنہء 2018 کے دوران ایل این جی کے نئے طویل المعیاد معاہدوں میں ایک بار پھر تیزی سے اضافہ ہوا ، جس کے باعث گیس کی لیکوئفیکیشن کے منصوبوں میں سرمایہ کاری بحال ہوسکتی ہے۔اس کے باوجود، طلب کے حالیہ تخمینہ کی بناء پر شیل کو خدشہ ہے کہ؛ سال 2020 کے وسط میں ایل این جی کی طلب کو پورا کرنے میں مشکلات کا سامنا بھی ہو سکتا ہے۔

مزید :

کامرس -