سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ کیس  ملزمان کے وکلاء سے حتمی دلائل طلب 

       سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ کیس  ملزمان کے وکلاء سے حتمی دلائل طلب 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگارخصوصی) انسداد دہشت گردی عدالت میں سانحہ ماڈل ٹاون استغاثہ کیس کی سماعت 5 مارچ تک ملتوی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر ملزمان کے وکلاء سے انسداددہشت گردی کی دفعہ ہٹانے کی درخواست پر حتمی دلائل طلب کر لیے انسداددہشت گردی عدالت کے جج اعجاز احمد بٹر نے کیس پر سماعت کی،کچھ ملزمان کے وکلاء کی جانب سے دہشت گردی کی دفعہ ختم کرنے کی درخواست دائر کی گئی ہے،عدالت میں استغاثہ کے مدعی جواد حامد اپنے وکیل کے ہمراہ پیش ہوئے جواد حامد کے وکیل مخدوم مجید شاہ ملزمان کی جانب سے دائر 23 اے ٹی اے کی درخواست پر دلائل مکمل کر چکے ہیں پراسیکیوٹر کے مطابق کیس میں ٹوٹل 138 ملزمان نامزد ہیں جس میں 126 ملزمان کو پیش ہونے کا حکم دے رکھا ہے ملزمان کے خلاف تھانہ ماڈل ٹاؤن میں دفعہ 302 کے تحت 2014 میں مقدمہ درج کیا گیا تھا تفتیشی رپورٹ کے مطابق ملزمان میں سابق وزیراعظم نواز شریف، سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف، سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق، سابق وزیر قانون رانا ثناء اللہ، سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار شامل ہیں جبکہ سابق آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا, سابق ڈی آئی جی رانا عبدالجبار سمیت پندرہ پولیس افسران کو مستقل حاضری سے استثنیٰ دے رکھا ہیدیگر ملزمان میں ڈی ایس پی عبداللہ جان, اے ایس آئی فاروق,اے ایس آئی اخلاق, شہزاد احمد اور خرم رفیق وغیرہ شامل ہیں۔
دلائل طلب 

مزید :

صفحہ آخر -