کلین انرجی پروگرام، 311ہائیڈ رو پاور پراجیکٹ مکمل، 672پر کام شروع

کلین انرجی پروگرام، 311ہائیڈ رو پاور پراجیکٹ مکمل، 672پر کام شروع

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 اسلام آباد(آئی این پی) صوبہ خیبر پختونخوا کے شمالی اضلاع میں 332   ہائیڈرو الیکٹرک پاور پروجیکٹ میں سے 311 مکمل ہوچکے ہیں۔  گوادر پرو نے کے  مطابق  وزیر اعظم کے کلین انرجی انویسٹمنٹ پروگرام (پی ایم   اے  سی ای  این  آئی پی) کے تحت  دوسرے مرحلے میں مزید 672 بجلی  کے منصوبے شروع کیے  جائیں گے۔  خیبر پختونخوا توانائی  ڈیپارٹمنٹ کے سینئر پلاننگ آفیسر ملک لقمان  نے   کہا   کہ پی ایم   اے  سی ای  این  آئی پی  کا  پہلا مرحلہ  رواں مالی سال میں مکمل کیا جائے گا  جس میں 32 میگاواٹ صلاحیت کے 332  چھوٹے  تونائی کے منصوبوں میں سے   311     اب تک مکمل ہو گئے  اور باقی کو  اس سال جون تک مکمل کیا جائے گا۔  دوسرے مرحلے میں 53 میگاواٹ  کے  672  چھوٹے     ہائیڈرو پاور پروجیکٹس پر  کام شرو ع کیا جا چکا ہے جو  2023 تک مکمل ہوں گے ، ۔   گوادر پرو کے مطابق  وزیر اعلی  خیبر پختونخوامحمود خان  نے بتایا ہے  کہ   یہ چھوٹے  پاور اسٹیشنز کل 55 میگاواٹ بجلی پیدا کریں گے۔ کورونا وائرس   کی وجہ سے مشکل مالی صورتحال کے باوجود  صوبے میں ترقیاتی سرگرمیوں اور عوامی فلاح و بہبود کے اقدامات پر  سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔  18 ارب کا  پی ایم   اے  سی ای  این  آئی پی کا  ایشین ڈویلپمنٹ بینک(اے ڈی بی)کی مالی اعانت سے آغاز کیا گیا تھا جس کے تحت صوبے کے شمالی اضلاع میں دو مراحل میں 1028  چھوٹے     ہائیڈرو پاور پروجیکٹس  تعمیر  کیے جائیں  گے ۔ اس کا مقصد صوبے کی بجلی سے  محروم آبادی   کی ضروریات کو تیزی سے  پورا کرنا  تھا اور چھوٹے     ہائیڈرو پاور پروجیکٹس کی تعمیر سے مقامی ہائیڈرو  پاور کی صلاحیت   سے استفادہ حاصل کرنا تھا۔چھوٹے     ہائیڈرو پاور پروجیکٹس کی  تعمیر  کا بنیادی مقصد سستی  اور صاف پن بجلی  کی پیداوار بڑھانا  اور مقامی علاقوں کو خاص طور پر بجلی سے محروم لوگوں کو زیادہ قابل اعتماد اور مستقل بجلی کی فراہمی ہے۔ ان  منصو بوں  سے بجلی کی موجودہ قلت دور ہو گی ،ملک کی صنعتی، زرعی اور معاشی ترقی کے لئے مستقبل کی ضروریات کو پورا کریں گے اور  ان سے    بجلی کی پیداوار، ترسیل اور تقسیم  کی  خاطر خواہ سہولیات میسر آئیں گی۔ مزید برآں  ان منصوبوں کی تعمیر  سے پائیدار بجلی کی فراہمی ہوگی اور بنیادی صنعت کی ترقی کے لئے ا اہم محرک  ثابت ہو نگے۔  منصو بوں  سے مقامی کمیونٹی  کو چھوٹی صنعتوں کے قیام کے ذریعہ معاشی سرگرمیوں میں اضافے کے مواقع میسر آئیں گے۔ منصوبوں کی  تکمیل سے    روزگار کے مواقع پیدا ہونگے   دیہی  علاقوں میں سماجی اور معاشی  ترقی حاصل ہو گی  جس سے لوگوں کی یہی علاقوں  سے شہر وں  میں  نقل مکانی کی حوصلہ شکنی ہوگی۔
پاور پراجیکٹ

مزید :

صفحہ آخر -