غیر قانونی بھرتیوں پر سابق اسپیشل ایجوکیشن سیکریٹری گرفتار 

غیر قانونی بھرتیوں پر سابق اسپیشل ایجوکیشن سیکریٹری گرفتار 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی(این این آئی) اسپیشل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ  میں 294افراد کی غیر قانونی بھرتیوں سے متعلق کیس میں درخواست ضمانت مسترد ہونے نیب نے سابق اسپیشل ایجوکیشن سیکریٹری نور محمد لغاری اور سابق سیکشن آفیسر اشوک کمار کو گرفتار کرلیا۔جمعہ کوسندھ ہائی کورٹ میں جسٹس محمد اقبال کلہوڑو اور جسٹس شمس الدین عباسی پر مشتمل ڈویژنل بینچ نے اسپیشل ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ  میں 294 افراد کی غیر قانونی بھرتیوں کے ریفرنس میں ملزمان کی درخواست ضمانت پر فیصلہ سنادیا۔ عدالت نے سابق سیکریٹری نور محمد لغاری سمیت 8 ملزمان کی درخواست ضمانت مسترد کردیں۔ملزمان میں پی ایس سیکریٹری محمد علی، ناز پروین، محمد علی شاہ، ڈاکٹر کیشور کمار، مشتاق احمد خالد سلیمان اور عبدالرحمان شامل ہیں۔ ضمانت مسترد ہونے پر نیب نے سندھ ہائیکورٹ کے باہر سے کارروائی کرکے دو ملزمان کو گرفتار کرلیا جن میں سابق اسپیشل ایجوکیشن سیکریٹری نور محمد لغاری اور ڈاکٹر کیشور کمار شامل ہیں۔نیب ذرائع کے مطابق دیگر ملزمان کو بھی جلد گرفتار کرلیا جائیگا۔ نیب کے مطابق ملزمان نے 2012 سے 2015 کے درمیان کراچی، حیدرآباد اور سکھر ریجن میں غیر قانونی بھرتیاں کیں اور قومی خزانے کا کروڑوں کا نقصان پہنچایا۔ ٹیسٹ میں تمام امیداوروں کو 90، 90 مارکس دیئے گئے۔ سابق سیکریٹری کے پی ایس نے اپنی اہلیہ کو عربی ٹیچر کی نوکری بھی دلوائی۔نیب کے ملزمان کی جانب سے غیرقانونی بھرتیاں کرکے قومی خزانے کو کروڑوں کا نقصان پہنچایا ہے۔ ملزمان کیخلاف احتساب عدالت میں ریفرنس زیر سماعت ہے۔