ضلع مظفر گڑھ: وارداتوں میں اضافہ‘ دو ماہ  کے دوران 1 کروڑ 67 لاکھ کا سامان غائب  پولیس ”لاپتہ“ لوگ خوفزدہ‘ صورتحال سنگین

  ضلع مظفر گڑھ: وارداتوں میں اضافہ‘ دو ماہ  کے دوران 1 کروڑ 67 لاکھ کا سامان ...

  

 مظفرگڑھ (بیورو رپورٹ‘ تحصیل رپورٹر‘ نامہ نگار) ضلع پولیس مظفرگڑھ کی مجموعی کارکردگی ناقص رہی، گزشتہ دو ماہ کے دوران (بقیہ نمبر49صفحہ 7پر)

شہری محتاط اندازے کے مطابق ایک کروڑ 67 لاکھ روپے سے زائد کے مال متاع سے محروم ہو گئے، چوری کی وارداتوں میں اضافے کے باعث شہری عدم تحفظ کا شکار ہیں، ذرائع کے مطابق ضلع پولیس صرف 56 لاکھ روپے کا مال مسروقہ برآمد کر سکی، متعدد متاثرہ شہریوں اور دکانداروں نے بتایا کہ پولیس چوری، نقب زنی، راہزنی وغیرہ کے مقدمات درج کرنے میں لیت ولعل سے کام لیتی ہے، جبکہ ڈکیتی کی وارداتوں میں اصل دفعات شامل کرنے کی بجائے 382 ت پ کا مقدمہ درج کر دیا جاتا ہے، ضلع پولیس مظفرگڑھ کے تھانوں پر مبینہ سفارشی تھانیدار تعینات ہیں جبکہ پولیس ملازمین کی اکثریت کے منشیات فروش گروہوں سے روابط کی شکایات عام ہیں، جن پر کوئی نوٹس نہیں لیا جاتا، رشوت ستانی معمول بن چکی ہے، مظفرگڑھ پولیس کے بھتہ خوروں، منشیات فروش گروہوں سے روابط رکھنے والے ملازمین کی ایک لسٹ چند ماہ قبل سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی لیکن اس پر کیا کارروائی ہوئی اس بارے کوئی معلومات عوام کے سامنے پیش نہیں کی گئی، ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن مظفرگڑھ اور پنجاب وکلاء  محاذ مظفرگڑھ کے عہدے داران اور کارکنان نے ائی جی پولیس پنجاب اور ایڈیشنل آئی جی پولیس جنوبی پنجاب سے نوٹس لینے اور ضلع پولیس مظفرگڑھ کی مجموعی کارکردگی بہتر بنانے کا مطالبہ کیا ہے،

صورتحال سنگین

مزید :

ملتان صفحہ آخر -