آٹا بحران‘ ٹرکنگ پوائنٹ سے شہری خالی ہاتھ واپس‘ افسر غائب 

آٹا بحران‘ ٹرکنگ پوائنٹ سے شہری خالی ہاتھ واپس‘ افسر غائب 

  

رحیم یارخان (بیورو رپورٹ) حکومت پنجاب محکمہ خوراک کی جانب سے صوبہ بھر کی طرح خان بیلہ و گردونواح کے شہریوں کے لیے کنٹرول ریٹ 430 روپے فی دس کلو اور 860 روپے فی 20 کلو آٹے کی فراہمی خواب بن گئی ڈپٹی کمشنر رحیم یار خان و ڈسٹرک فوڈ کنٹرولر رحیم یار خان کی جانب سے الحافظ فلور ملز کے سہولت بازار میں روزانہ 10 کلو آنے والے 600 (بقیہ نمبر35صفحہ 6پر)

آٹے کے تھیلے شہر کی عوام کو سہولت فراہم کرنے کی خاطر 10 جنوری کے بعد سے ٹرکنگ پوائنٹ میں تبدیل کرکے فوڈ انسپکٹر فرحان اشرف کی ڈیوٹی لگائی گئی کہ وہ روزانہ اپنی زیر نگرانی ترتیب وار شہریوں کو آٹے کی فراہمی یقینی بنائے لیکن ایسا نہ ہوسکا‘ آٹا مافیا سے گٹھ جوڑ کر کے ٹرکنگ پوائنٹ پر روزانہ 600 آٹے کے تھیلے پہنچانے کی بجائے دو سو تا اڑھائی سو تھیلا ٹرکنگ پوائنٹ پر فراہم کرنے کے بعد روزانہ 350 تا 400 تھیلے آٹا غبن کرکے ماہانہ ایک کروڑ روپے کے قریب مالیت کاآٹا غبن کرنا شروع کردیا حس پر سینکڑوں شہری روزانہ ٹرکنگ پوائنٹ سے خالی ہاتھ لوٹنے لگے ہیں جس پر لوگوں نے احتجاج کرتے ہوئے آٹا دو آٹا دو کے نعرے لگائے۔ ڈپٹی کمشنر رحیم یار خانڈسٹرک فوڈ کنٹرولر رحیم یار خانکمشنر بہاولپورڈپٹی ڈائریکٹر خوراک بہاولپور و اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ ذمہ داروں کو نوکری سے برخاست کرکے کاروائی کی جائے اور خان بیلہ شہر میں آٹے کی فوڈ انسپکٹر کی جانب سے پیدا شدہ قلت کو ختم کرنے کے لیے وافر مقدار میں آٹا فراہم کیا جائے۔ اس سلسلہ میں فوڈ انسپکٹر فرحان اشرف سے موقف لینے کی خاطر انکے فون نمبر 03006823206 پر رابطہ کیا گیا تو انہوں نے فون نہ اٹھایا۔

افسر غائب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -