خاتون کو ناک میں نتھلی پہننا مہنگا پڑ گیا، موت کے منہ میں جاتے بال بال بچی

 خاتون کو ناک میں نتھلی پہننا مہنگا پڑ گیا، موت کے منہ میں جاتے بال بال بچی
 خاتون کو ناک میں نتھلی پہننا مہنگا پڑ گیا، موت کے منہ میں جاتے بال بال بچی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں ایک 37سالہ خاتون کو ناک میں نتھلی پہننا مہنگا پڑ گیا۔ موت کے منہ میں جاتے بال بال بچی۔ میل آن لائن کے مطابق امریکی ریاست نیویارک کے علاقے کوئنز کی رہائشی اس خاتون کا نام ڈینا سمتھ ہے جو نارتھ ویل ہیلتھ میں بطور منیجر ملازمت کرتی ہے۔ اس نے گزشتہ سال کرسمس سے قبل 60ڈالر (تقریباً ساڑھے 9ہزار روپے)کی نتھلی خریدی اور ناک میں پہنی۔

یہ نتھلی ناک میں پہننے کے چند روز بعد ہی ڈینا کی طبیعت ناساز رہنے لگی ۔ ڈینا نے خیال کیا کہ یہ کورونا وائرس کی وباءاور دیگر وجوہات کی بناءپر لاحق ہونے والے ذہنی دباﺅ کا نتیجہ ہے۔ تاہم اس کی حالت مسلسل بگڑتی چلی گئی اور اس کے لیے کھانا پینا دوبھر ہو گیا۔ 12جنوری کو بالآخر وہ لانگ آئی لینڈ جیوش میڈیکل سنٹر چلی گئی اور اپنے ٹیسٹ کروائے جن میں معلوم ہوا کہ اسے انتہائی نوعیت کا ہیپاٹائٹس بی لاحق ہو چکا ہے اور اس کی وجہ سے اس کا جگر ناکارہ ہونے کے قریب پہنچ چکا ہے۔

ڈاکٹروں نے ڈینا کو بتایا کہ اس کا مرض اس قدر خطرناک حد تک پہنچ چکا ہے کہ اس کی چند دنوں کی اندر موت واقع ہو سکتی ہے۔ وہاں سے ڈینا کو فوری طور پر نارتھ شور یونیورسٹی ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے فوری طور پر اس کا جگر ٹرانسپلانٹ کیا۔ ڈینا کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ ڈینا کی خوش قسمتی ہے کہ صرف 48گھنٹے کے اندر اس کا لیور میچ مل گیا اور 17جنوری کو اس کی سرجری کر دی گئی۔ صحت مندی کے بعد ڈینا نے بتایا کہ ”میری ناک کی نتھلی آلودہ تھی جس سے مجھے یہ خطرناک بیماری لاحق ہوئی۔ چند دنوں کے اندر میری یہ حالت ہو گئی تھی کہ میں پانی بھی پیتی تو وہ بھی قے کی صورت میں نکل جاتا تھااورقے میں خون بھی آنے لگا تھا۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -