عوامی طاقت سے دوبارہ اقتدار میں آئیں گے   تحریک انصاف

عوامی طاقت سے دوبارہ اقتدار میں آئیں گے   تحریک انصاف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


   کراچی(سٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف کے تحت اتوار کو لیاقت آباد نمبر دس پر مہنگائی کے خلاف عوامی احتجاج کیا گیا۔احتجاج سے پی ٹی آئی کے رہنماؤں آفتاب صدیقی،حلیم عادل شیخ،عمران اسماعیل،فردوس شمیم نقوی،خرم شیر زمان،بلال غفار،سعید آفریدی،سیف الرحمن،صائمہ ندیم،علی جی جی،فہیم خان،عطااللہ خان،شبیر قریشی،راجہ اظہر،شہزاد قریشی اور دیگر خطاب کیا۔ان رہنماؤں نے کہا کہ آج مہنگائی نے عوام کی کمر توڑ دی یے،احتجاج حکومت کے لیے پیغام ہے۔اب پورے ملک میں مہنگائی کے خلاف احتجاج ہوگا۔امپورٹیڈ حکومت نے ملک کو تباہ کردیا ہے۔ہم انہیں الیکشن سے بھاگنے نہیں دیں گے۔عوامی طاقت سے پی ٹی آئی دوبارہ اقتدار میں آئے گی۔عمران خان دوبارہ وزیراعظم بنیں گے۔عوام مہنگائی کے خلاف گھروں سے نکالیں۔ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ملک میں فوری عام انتخابات کرائے جائیں۔پی ٹی آئی کراچی کی سب سے بڑی سیاسی جماعت ہے۔ہم گرفتاریوں سے نہیں ڈرتے۔اس حکومت کی رخصتی تک تحریک انصاف کی عوامی جدوجہد جاری رہے گی۔عوامی احتجاج میں پی ٹی آئی کے کارکنان نے مہنگائی کے خلاف بینرز اور پلے کارڈ اٹھارکھے تھے۔احتجاج سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی کراچی کے صدر آفتاب صدیقی نے کہا کہ  پارٹی تنظیم نے آج منظم انداز میں احتجاج کو کامیاب کیا۔پارٹی اورگنائزیشن کا مشکور ہوں۔اس وقت ملک میں کووڈ نہیں ہے مگر کاروبار بھی ختم ہے۔کنسٹرکشن کا کاروبار تباہی کے دہانے پر ہیں۔یہ سیاسی گرفتاریاں ہیں کریمنل نہیں۔یہ تحریک انصاف کے کارکنوں کو لاہور کی سڑکوں پر گھماتے ہیں۔یہ کارکنان کو زہنی تکلیف دینا بند کریں۔انشاللہ کراچی کے عوام جدوجہد میں عمران خان کے ساتھ ہے۔حلیم عادل شیخ کا خطاب نے کہا کہ آفتاب صدیقی نے صدارت کا منصب سنبھال کر پہلا انتخاب ضلعی وسطی کا کیا۔لیاقت آباد والے جیل جانے کیلئے تیار ہیں۔زرداری صاحب سن لیں کراچی والے جیلوں میں جاکر اپنے جوش و جذبے کا بتائیں گے۔ آج صرف ہر گلی میں عمران عمران ہے۔پاکستان کے قیام کیلئے قربانیاں دینے والی عوام عمران خان کے ہاتھ مضبوط کریں گے۔ یہ گوروں کی ناجائز اولادیں ملک کو معاشی قتل کررہے ہیں۔جنہوں نے انجنیرنگ کی انہوں نے کبھی سوچا تھا کہ عوام ایسا ردعمل دیں گے۔باجوہ صاحب نے ان غریبوں کا نہیں سوچا۔12 کا نان آج 20 کا ہے 300 کی مرغی 750 کی ہوگئی۔ حلیم عادل شیخ نے کہا کہ میرا لیڈر عمران خان عوام کیلئے گولیاں کھارہا ہے۔عمران خان کو اللہ نے بچالیا۔ آج عمران خان کے ورکرز کھلاڑی میدان میں ہیں۔ ملک میں خودکشیوں کا عمل شروع ہوگیا ہے۔عمران خان کی تحریک اب آخری مراحل میں ہے۔ہم اس مہنگائی کے خاتمے کیلئے ہر سطح پر احتجاج کریں گے اور عمران خان کو لائیں گے۔ڈالر کہاں سے کہاں چلا گیا یے۔فردوس شمیم نقوی نے کہا کہ لیاقت آباد اس شخص کے نام پر ہے جس نے ہندوستان کیخلاف مکہ بلند کیا تھا۔لیاقت آباد نے قائد اعظم کی بہن کا ساتھ دینے کیلئے جدوجہد کی تھی۔یہاں رہنے والوں نے مسلمانوں کیلئے ہجرت کی تھی۔ مہنگائی کے خاتمے کیلئے لیاقت آباد کو نکلنا ہوگا۔جب عوام پر زندگی تنگ ہوجائے تو حکمرانوں کو ان کے محلوں سے نکالیں۔عمران اسماعیل نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ رات کی تاریکی میں سازش ہوئی عوامی حقوق پر ڈاکہ ڈالا گیا۔عوام کے ہر دل عزیز وزیراعظم کو گھر بھیجا گیا۔چوروں کو اقتدار دیا جنہیں جیل میں ہونا چاہیئے تھا۔رانا ثنا اور شہباز شریف ودیگر کو آج جیل میں چکی پیسنا چاہیے تھا۔یہ ہر جگہ الیکشن سے بھاگ رہے ہیں۔یہ جتنا زور لگائیں الیکشن تو ہر صورت ہوگا۔ہمیں عمران خان کے علاہ کوئی دوسری امید کی کرن نظر نہیں اتی۔عمران خان کی تحریک میں قدم بہ قدم ہیں۔خرم شیر زمان نے کہا کہ جو کہتے تھے پی ٹی آئی کلفٹن کی جماعت ہے وہ دیکھیں آج لیاقت آباد کا منظر دیکھیں۔لیاقت آباد نے ثابت کردیا کہ پورے ملک کی طرح لیاقت آباد بھی عمران خان کے ساتھ ہے۔ زرداری کے یار غدار ہیں کیونکہ سارا رجیم چینج کا تماشہ زرداری نے لگایا۔زرداری کہتا ہے عمران کو ہٹانے کی سازش بلاول ہاس میں ہوئی۔ان تینوں یاروں کو الیکشن میں وہ سبق سکھائیں گے یہ اپنی دھوتی پکڑ کر بھاگیں گے۔ وہ دن دور نہیں جب عمران خان انقلاب لیکر آئے گا اور ملک ان کے ساتھ ہوگا۔ آج کراچی کے صدر آفتاب صدیقی کو مبارکباد اور شکریہ کرتا ہوں۔مہنگائی کا کامیاب احتجاج کرکے ثابت ہوا پی ٹی آئی پورے کراچی کی جماعت ہے۔سعید آفریدی نے کہا کہ 10 ماہ پہلے پاکستان میں خوشحالی تھی۔عوام کے پاس کامیاب جوان پروگرام، صحت کارڈ، احساس پروگرام تھا۔ملک میں امن تھا تاریخی ٹیکس کلیکشن کا سلسلہ جاری تھا۔کشمیر، گستاخانہ مواد کیخلاف عمران خان نے مقدمہ لڑا۔پی ڈی ایم کو پاکستان کی خوشحالی سے تکلیف ہونے لگی۔عمران خان کی حکومت کو امریکی غلاموں نے بدل دیا۔ عمران خان کے دور میں پیٹرول نایاب اور مہنگا نہیں تھا۔آج لوگوں کی چیزیں خریدنے کی سقط ختم ہوگئی ہے۔فہیم خان نے کہا کہ کراچی کے صدر آفتاب صدیقی کو کامیاب پروگرام کرنے پر مبارکباد دیتا ہوں۔مہنگائی کا عوامی احتجاج آج جلسے کا سماں بن گیا ہے۔مہنگائی نے کمر توڑدی ہے اب ہمارا گھر بھی نہیں چلتا۔حکومت 50 ہزار میں بھی کسی کے گھر کا بجٹ بناکر دکھا دیں گے۔ایم کیو ایم نے لیاقت آباد کے عوام کا ووٹ بیچ دیا کیا عوام انہیں معاف کرے گیعمران خان کی کال پر جیل بھرنے کیلئے بھی نکل جائیں گے۔بلال غفارنے کہا کہ کراچی والے ایک سال سے امپورٹڈ حکومت کیخلاف جدوجہد کررہے ہیں۔بجلی گیس کے بل آج اضافی آتے ہیں۔10 ماہ میں کارخانے اور صنعتیں بند ہونے جارہی ہیں۔پاکستان میں 41فیصد مہنگائی ہوئی آئی ایم ایف کی شرائط سے مزید مہنگائی ہوگی۔25 ہزار روپے کمانے والا فرد اپنا گھر نہیں چلا سکتا۔ملک میں کاروباری طبقہ پس رہا ہے۔اس معاشی کی تباہی کی زمہ شہباز حکومت ہے۔سن رہے ہیں بجلی کو مزید مہنگا کریں گے اور شرح سود کو بڑھائیں گے۔عوام گھبرائیں گے نہیں حقیقی آزادی کی تحریک میں اپنے لیڈر کے ساتھ ہیں۔راجا اظہر نے کہا کہ نہ عوام کے پاس بجلی ہے نہ پانی ہے کیونکہ مریم،بلاول کے کے پاپا چور ہیں۔بلاول کے پاپا صرف چور نہیں ایک ڈاکو بھی ہیں۔ عمران خان نے ان نوسربازوں کو بینقاب کردیا ہے۔عطا اللہ خان نے کہا کہ عمران خان 22 کروڑ عوام کے دلوں کا وزیر اعظم ہے۔عمران خان کو حکومت سے نکال سکتے تو چند لوگوں کے اثاثے کیوں ظاہر کیوں نہیں کرسکتے۔انشاللہ عوام کی محنت سے عمران خان ایک بار پھر وزیراعظم بنیں گے۔شبیر قریشی نے کہا کہ آج امپورٹڈحکومت اور امریکی پالتو نے قوم کا جینا حرام کردیا یے۔لیاقت آباد نے مہنگائی کو مسترد کردیا ہے۔آج مزدور، کسان، ہر ایک کا نعرہ صرف ایک ہے امپورٹڈحکومت نامنظور۔شہزاد قریشی نے کہا کہ آج عوام نے بتادیا کہ وہ عمران خان کے ساتھ ہیں۔یہ حکومت اپنے کیسز معاف کرانے آئی تھی۔اس حکومت کو عوام سے کوئی غرض نہیں ہے۔لیاقت آباد نے کراچی کی سیاست میں اپنا کردار ادا کیا۔تحریکوں کا آغاز اس علاقے سے شروع ہوئی ہے۔ اگر انہیں اقتدار سے نہ ہٹایا تو مزید مہنگائی ہوگی۔علی جی جی نے کہا کہ آج عوام کی آمد کا مشکور ہوں۔ مہنگائی کیخلاف واحد تحریک انصاف نے سندھ اسمبلی میں آواز اٹھائی۔ مہنگائی میں سندھ حکومت کا سسٹم بھی ملوث ہے۔ یہ اپنے ڈی سیز کو پابند نہیں کرتے کہ مصنوعی مہنگائی کو کنٹرول کرے۔یہ عوام دشمن حکومت ہے۔صائمہ ندیم نے کہا کہ اس مہنگائی میں خواتین کیلئے گھر چلانا آسان نہیں۔مائیں اپنے بچوں کو ایک روٹی نہیں دے سکتی۔بچوں کی تعلیم اور خواہشات کو پورا نہیں کرسکتے تو حکمرانوں کا کیا کام ہے۔ایک آٹے کی بوری کیلئے خواتین لمبی قطاریں لگاتی ہیں۔ یہ امپورٹڈ حکومت ہمیں منظور نہیں۔یہ حکومت آئی ایم ایف کی منظور نظر ہے۔اب آئی ایم ایف بھی ان پر یقین نہیں کرتی انہیں خطرہ ہے یہ پیسہ جیب میں ڈالیں گے۔سعید آفریدی نے کہا کہ موٹر سائیکل میں عوام کے پاس پیٹرول ڈالنے کے پیسے نہیں ہیں۔حکومت نے عوام کی زندگی اجیرن کردی ہے۔انشاللہ امپورٹڈ حکومت کو عوام کی طاقت سے گھر بھیجیں گے۔احتجاج سے معروف تاجر شرجیل گوپلانی نے کہا کہ اب مارکیٹوں میں چہل پہل نظر نہیں اتی۔ملک معاشی بدحالی کا شکار ہے۔ حکومت کہتی ہے کاروبار بند کرو۔پاکستان میں را مٹیریل نہیں ائے گا تو صنعتیں کیسے چلیں گی۔کراچی کا کاروباری مجاز الگ ہے۔ حکومت معاشی بندش کا نوٹیفکیشن واپس لے۔ تحریک انصاف نے احتجاج کیلئے مدعو کیا ان کے مشکور ہیں۔تاجروں  سے کہوں گا اب پانی سر سے اوپر چلا گیا ہے سڑکوں پر نکلیں۔حکمران معیشت کو بحال و آزاد کریں۔پاکستان کو بچانا ہے تو معیشت کو آزاد کرنا ہوگا۔