عمران خان سے کہتا تھا اپوزیشن کو تسلیم کریں فاشسٹ نہ بنیں اپنی پارٹی سے بھی یہی کہتا ہوں:بیرسٹر ظفر اللہ خان کھل کر بول پڑے

عمران خان سے کہتا تھا اپوزیشن کو تسلیم کریں فاشسٹ نہ بنیں اپنی پارٹی سے بھی ...
عمران خان سے کہتا تھا اپوزیشن کو تسلیم کریں فاشسٹ نہ بنیں اپنی پارٹی سے بھی یہی کہتا ہوں:بیرسٹر ظفر اللہ خان کھل کر بول پڑے
سورس: فائل فوٹو

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کے رہنما بیرسٹر ظفر اللہ خان نے کہا کہ صدر آئین کے تحت وزیراعظم کی ایڈوائس پر عمل کرنے  کے پابند ہیں.عمران خان سے کہتا تھا اپوزیشن کو تسلیم کریں فاشسٹ نہ بنیں اپنی پارٹی سے بھی یہی کہتا ہوں۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار  نجی ٹی وی کے پروگرام ’’کیپٹل ٹاک‘‘میں میزبان حامد میرسے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔پروگرام میں  تحریک انصاف کی رہنما زرتاج گل اور  پیپلز پارٹی کے رہنما رمیش کمارنے بھی شرکت کی ۔

 بیرسٹر ظفر اللہ خان کا کہنا تھا  کہ صدر آئین کے تحت وزیراعظم کی ایڈوائس پر عمل کرنے کا پابند ہے،عمران خان سے کہتا تھا اپوزیشن کو تسلیم کریں فاشسٹ نہ بنیں اپنی پارٹی سے بھی یہی کہتا ہوں، زرتاج گل کیخلاف گائے چوری کا مقدمہ نہیں ہونا چاہیے تھا، 2013ء میں دھرنے، کرپشن اور دھاندلی کا شور مچا اس روش کو دہرانا نہیں چاہیے، پنجاب حکومت کو مقدمات کا جائزہ لے کر غلط مقدمات ختم کرنے چاہئیں، پنجاب کا سارا فنڈ لاہور میں نہ لگایا جائے، سینٹرل پنجاب کی ڈیولپمنٹ نارتھ پنجاب اور ساؤتھ پنجاب سے بہت زیادہ ہے۔

ظفر اللہ خان کا مزید  کہنا تھا کہ شہباز شریف اور آصف زرداری دونوں کو ساتھ آگے بڑھنا ہوگا، 2018ء میں ہماری پارٹی کے 80 لوگوں کے دس دس ہزار ووٹ مسترد ہوئے تھے، جنرل فیض حمید اور عمران خان نے مجھ پر3 سال ظلم کیے، این اے 15میں دو ضلعوں میں نواز شریف کے ساتھ دھاندلی ہوئی۔