جاپان میں خواتین چہرے کی شیو کروانے لگیں

جاپان میں خواتین چہرے کی شیو کروانے لگیں
جاپان میں خواتین چہرے کی شیو کروانے لگیں

  


ٹوکیو (نیوز ڈیسک) جاپانی خواتین کی جلد کی نرمی و ملائمت ساری دنیا میں مشہور ہے لیکن اس کے دلکشی کے پیچھے چھپا ایک حیرت انگیز راز پہلی دفعہ سامنے آیا ہے۔

وہ آدمی جو پیدا بونا ہوا تھا لیکن جب مرا تودیو جیسا تھا،میڈیکل سائنس کی تاریخ کی پراسرار ترین کہانی، جاننے کیلئے کلک کریں

جاپانی بیوٹی ماہرین کے مطابق جاپان میں خواتین اپنی جلد کو جوان اور ترو تازہ رکھنے کیلئے مردوں کی طرح شیو کا سہارا لیتی ہیں اور اس ملک کے ہر بڑے بیوٹی سیلون میں خواتین کو شیو کی سہولت فراہم کی جا رہی ہے۔ بیوٹی ایکسپرٹ مامیکا اوزاکی کہتی ہیں کہ مردوں کے برعکس جاپانی خواتین اپنےپورے  چہرے کی شیو کرتی ہیں۔ یہ تھوڑی کے نیچے، گالوں پر، لبوں کے اوپر نیچے، ماتھے پر اور حتی کے ناک پر بھی بلیڈ چلاتی ہیں۔ وہ کہتی ہیں کہ شیو کرنے سے باریک بال صاف ہو جاتے ہیں، جلد کے مردہ خلیے صاف ہو جاتے ہیں اور نئی اور تازہ باریک پرت آ جاتی ہے جس کی وجہ سے جلد نہ صرف نرم و ملائم اور تروتازہ رہتی ہیں بلکہ جوان نظر آتی ہے۔ امریکی کاسمیٹک ایکسپرٹ میری شوک بھی اس بات سے اتفاق کرتی ہیں۔ وہ کہتی ہیں کہ مرد اسی لئے لمبے عرصے تک جوان نظر آتے ہیں کہ وہ روزانہ شیو کرتے ہیں جس کی وجہ سے ان کی جلد صاف، توانا اور جوان رہتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ بات سو فیصد غلط ہے کہ شیو کرنے سے بال زیادہ یا موٹے ہو جاتے ہیں کیونکہ اگر ایسا ہو تو کئی سال کی شیو کے بعد مردوں کے چہرے پر بال رسیوں کی طرح موٹے ہو جائیں۔ ان کا کہنا ہے کہ خواتین جب بھی شیو کرتی ہیں تو دوبارہ آنے والے بال نہایت نرم اور باریک ہی ہوتے ہیں جنہیں با آسانی دوبارہ صاف کیا جا سکتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...