ٹیکنالوجی میں ساری دنیا کو مات دینے والی جاپانی قوم آج بھی فرسودہ خیالات کی مالک

ٹیکنالوجی میں ساری دنیا کو مات دینے والی جاپانی قوم آج بھی فرسودہ خیالات کی ...
ٹیکنالوجی میں ساری دنیا کو مات دینے والی جاپانی قوم آج بھی فرسودہ خیالات کی مالک

  

ٹوکیو (نیوز ڈیسک) جاپان میں گرتی ہوئی شرح پیدائش کئی دہائیوں سے پریشانی کا باعث بنی ہوئی ہے اور ایک نظریے کے مطابق کم شرح پیدائش کی وجہ ”آتشی گھوڑے کا سال“ اور اس سال پیدا ہونے والی آتش مزاج خواتین ہیں۔ جاپانی لوگ چینی بروج کی تبدیل شدہ صورت استعمال کرتے ہیں جن میں ہر سال کو ایک جانور سے منسوب کیا جاتا ہے اور یہ سلسلہ 12 سالوں کے چکر پر مشتمل ہوتا ہے۔

وہ باتیں جو مر د خواتین کی نہیں سننا چاہتے ،جاننے کیلئے کلک کریں

 ہر 60 سال کے بعد ”آتشی گھوڑے کا سال“ آتا ہے اور جاپان میں سمجھا جاتا ہے کہ اس سال میں پیدا ہونے والی لڑکیاں آتشی مزاج والی منہ زور خواتین بنتی ہیں اور اپنے خاوندوں کو لے ڈوبتی ہیں۔ کہا جاتا ہے کہ 1966ء’آتشی گھوڑے کا سال‘ تھااور تب جاپانی خواتین کی بھاری اکثریت نے اسقاط حمل کروا دیا تھا۔ سال 1965ءمیں جاپان کی شرح پیدائش 1.12 فیصد تھی جبکہ 1966ءمیں یہ اچانک 0.77 فیصد پر آ گئی۔ خواتین کی بڑی تعداد بچہ پیدا نہ کرنے کی وجہ سے ملازمت پیشہ ہو گئی اور اس کے بعد کم بچوں کا رجحان چلتا رہا۔ اگلا ”آتشی گھوڑے کا سال“ 2026ءہے اور ماہرین عمرانیات ابھی سے پریشان ہیں کہ اس دفعہ پہلے سے کم شرح پیدائش کے ساتھ جانے کیا ہو گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -