انڈسٹریل ایریا کو لوڈشیڈنگ سے مستثنا قرار دینے کا فیصلہ

انڈسٹریل ایریا کو لوڈشیڈنگ سے مستثنا قرار دینے کا فیصلہ

  

                                                              لاہور(کامرس رپورٹر)بجلی کے ملک گیر بریک ڈاﺅن کے 48 گھنٹے بعد بھی سسٹم مکمل بحال نہیں ہو سکا ۔ وزارت بجلی و پانی اور این ٹی ڈی سی کی جانب سے گزشتہ روز بھی آج شام تک بحالی کا دعوی کیا گیا جو پورا نہیں ہوا ۔ این ٹی ڈی سی کی جانب سے گزشتہ روز بھی پیداوار اور شارٹ فال کے حوالے سے غلط اعداد و شمار ہی پیش کئے گئے ۔ دوسری جانب وزارت بجلی و پانی نے آئندہ چند روز میں ملک کے تمام انڈسٹریل ایریا کو مستثنی قرار دینے کا فیصلہ کیا ہے اس اقدام سے شارٹ فال کا تقریبا سارا بوجھ گھریلو اور کمرشل صارفین پر پڑ جائے گا اور ان کو موسم گرما سے قبل ہی بدترین لوڈ شیڈنگ کے عذاب سے دو چار ہونا پڑے گا ۔ سسٹم مکمل بحال نہ ہونے کے باعث گزشتہ روز بھی بیس گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ شہروں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ کم رکھا گیا ۔ شہروں میں پندرہ سے سولہ گھٹنے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ این ٹی ڈی سی کی

 جانب سے گزشتہ روز دعوی کیا گیا کہ بجلی کی پیداوار اٹھ ہزار پانچ سو میگا واٹ ہو گئی ہے اور صرف تین ہزار سات سو میگا واٹ کا شارٹ فال ہے ۔ این ٹی ڈی سی کے مطابق شہروں میں چھ سے اٹھ اور دیہی علاقوں میں اٹھ سے دس گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے جبکہ صنعتوں کے لئے چار گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے ۔ صرف تین ہزار سات سو میگا واٹ کے شارٹ فال کے باوجود بھی بیس گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے دوسری جانب لیسکو سمیت دیگر تمام ڈسکوز نے آج اور کل مرمت کے نام پر درجنوں فیڈرز بند رکھنے کا شیڈول جاری کر دیا ہے جس کے تحت دس گھنٹے تک مسلسل بجلی کی بندش کی جائے گی ۔ ماہرین کے مطابق آج شام تک سسٹم بحال ہو جائے گا لیکن پیداوار کم ہونے کے باعث شارٹ فال میں کوئی زیادہ کمی متوقع نہیں ہے ۔

مزید :

علاقائی -