برطانوی پائلٹ نے ہوائی سفر سے متعلق تمام سوالات کے جواب دے دئیے

برطانوی پائلٹ نے ہوائی سفر سے متعلق تمام سوالات کے جواب دے دئیے
برطانوی پائلٹ نے ہوائی سفر سے متعلق تمام سوالات کے جواب دے دئیے

  


لندن(نیوزڈیسک)جہاز میں سفر کا شوق تو اکثر لوگوں کو حد سے زیادہ ہوتا ہے لیکن حال ہی میں ہونے والے خوفناک فضائی حادثوں نے کئی لوگوں کو خوفزدہ کردیا ہے اور نہ چاہتے ہوئے بھی اکثر لوگ جہاز میں بیٹھنے سے بھی ڈرنے لگے ہیں۔ایسے میں برطانوی ائیر لائن کے ایک ماہر پائلٹ نے چند ایسے طریقے بتائے ہیں کہ جن پر عمل کرکے لوگ اس خوف کو دور کرسکتے ہیں۔برٹش ائیرویزکے ہیڈ آف فلائیٹ ٹیکنیکل اینڈ ٹریننگ کے کیپٹن ڈیو تھامسن کہتے ہیں کہ اس خوف پرقابو پایا جا سکتا ہے۔یہ خوف مختلف طرح کے ہوتے ہیں ،آئیے ان کا باری باری تجزیہ اور ان سے نجات کا طریقہ جانتے ہیں۔جب بھی موسم خراب ہوتو پائلٹ طوفان کے اوپر جہاش اڑاتا ہے،کیپٹن تھامسن کہتے ہیں کہ یہ ایک اچھا آپشن ہے لیکن اگر طوفان ہی 40فٹ کی بلندی پر ہو تو پھر کیا کیا جائے کیونکہ جہاز اس سے زیادہ بلندی ہر نہیں جا سکتا۔ ان کا کہنا ہے کہ ایسی صورت میں پائلٹ کو چاہیے کہ طوفان سے دور رہے، طوفان کے اندر جانے کی بجائے اس کے اطراف میں جہاز اڑایاجائے۔تمام طوفان ایک سے ہوتے ہیں لہذا جہاز کو ان کے اوپر پروازکرنی چاہیے،کیپٹن تھامسن کا کہنا ہے کہ ایسا ہرگز نہیں ہے کیونکہ دنیا بھر میں موسموں کے خواص ایک دوسرے سے مختلف ہیں۔ برطانیہ میں آنے والے طوفان شمالی اور جنوبی امریکہ میں آنے والو طوفانوں سے مختلف ہیں ،اسی طرح دنیا کے دیگر حصوں میں طوفان مختلف ہوتے ہیں لہذا جب بھی ہم کسی ایسے ائیرپورٹ کی طرف جائیں تو چاہیے کہ وہاں کے موسم اور فضائی طوفانوں کے بارے میں تمام معلومات رکھتے ہوں جبکہ اس جگہ کے ائیر ٹریفک کنٹرول کے ساتھ رابطے میں رہنا بھی بہت فائدہ مند ہوتا ہے۔،ہوا کی وجہ سے طیارے نیچے گھسیٹے جا سکتے ہیں،جہاز ہوا کی وجہ سے طیارے نیچے گھسیٹے جاتے ہیں لیکن یہ ایسا نہیں جیسا ہم سمجھتے ہیں بلکہ یہ ایک معمولی سا ارتعاش ہوتا ہے جو کہ ایک روٹین کی چیز ہے لیکن بعض اوقات ہمارے ذہن میں ہوتا ہے کہ شاید اس سے طیارہ تباہ ہوسکتا ہے۔فضا ئی خرابی خطرناک ہے،کیپٹن تھامسن کا کہنا ہے کہ فضائی خرابی (trubulence)ایک عام سی بات ہے لیکن اگر دوران پرواز یہ آئے تو اکثر مسافر بہت زیادہ گھبرا جاتے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ یہ پائلٹ کے لئے ضروری ہے کہ وہ فلائیٹ سے قبل موسمی رپورٹ کا مطالعہ کرے اور دوران پرواز ائیر ٹریفک کنٹرول سے رابطے میں رہنا ضروری ہے تا کہ آپ موسمیاتی تغیرات سے بچتے ہوئے پرواز جاری رکھ سکیں۔یہ بات بھی دلچسپی سے خالی نہیں کہ موسمیاتی خرابی میں پائلٹ کوئی جہا ز سے لڑنا شروع نہیں ہو جاتا بلکہ جہازوں کے ڈیزائن ہی اب ایسے بنا دئیے گئے ہیں کہ وہ موسمیاتی خرابی میں بھی باآسانی پرواز کر لیتے ہیں۔،کچھ ائیر پورٹس لینڈنگ اور ٹیک آف کے لئے بہت خطرناک ہیں،اس بات میں کوئی شک نہیں ہے کہ کچھ ائیر پورٹس لینڈنگ اور ٹیک آف کے لئے خطرناک ہیں لیکن اگر پائلٹ موسمیاتی حالات اور ائیرپورٹ کے بارے میں پڑھ لے تو اس کے لئے یہ ایک انتہائی آسان عمل ہے۔کیپٹن تھامسن کہتے ہیں کہ مثال کے طور پر اگر کسی ایسے ائیرپورٹ پو جانا ہے جہاں لینڈنگ مشکل سمجھی جاتی ہے تو ہائلٹ کو چاہیے کہ جہاز اتارتے وقت وہاں کے ٹریفک کنٹرول سے رابطے میں رہنے کے علاوہ وہاں کے بارے میں پڑھ لے۔اس کا کہنا ہے کہ اس مقصد کے لئے ٹریننگ موادموجود ہوتے ہیں اور اگر کبھی ایسے ائیر پورٹ کی جانب سفر کرنا پڑے تو اس مواد کا مطالعہ کرے۔

مزید : علاقائی


loading...