ترقی کا راستہ مذہبی رواداری اورعورتوں کے حقوق سے ہو کر جاتا ہے: اوباما

ترقی کا راستہ مذہبی رواداری اورعورتوں کے حقوق سے ہو کر جاتا ہے: اوباما
ترقی کا راستہ مذہبی رواداری اورعورتوں کے حقوق سے ہو کر جاتا ہے: اوباما

  

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر باراک اوباما نے کہاہے کہ آگے بڑھنا ہے تو مذہبی رواداری کا دامن نہ چھوڑیں اور عورتوں کو بھی آگے بڑھنے کا برابر موقع دیں۔

دہلی کے سیری فورٹ آڈیٹوریم میں طلباءسے خطاب کرتے ہوئے مہمان امریکی صدر کاکہناتھاکہ طاقت کے ساتھ ذمہ داری بھی آتی ہے، انڈیا کو خطے میں اور عالمی سٹیج پر زیادہ موثر قائدانہ کردار ادا کرنا چاہیے،دنیا میں آج بھی بہت عدم مساوات ہے۔

صدر اوباما نے کہا کہ وہ ملک زیادہ کامیاب ہوتے ہیں جن کی عورتیں زیادہ کامیاب ہوتی ہیں اور کوئی ملک کتنی ترقی کرے گا اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ وہاں عورتوں کے ساتھ کیسا سلوک کیا جاتا ہے۔

اوباماکاکہناتھاکہ دنیا بھر میں ہم مذہب کے نام پر تشدد دیکھتے ہیں، تین سال پہلے امریکہ کے ایک گرودوارے میں ایک شخص نے چھ معصوم لوگوں کو ہلاک کردیا تھا اور سوگ کے اس ماحول میں عزم دہرایا تھا کہ ہر شخص کو اپنے عقیدے پر اپنی مرضی کے مطابق عمل کرنے کا حق حاصل ہونا چاہیے اور اگر وہ چاہے تو بے خوف و خطر کسی بھی مذہب پر عمل نہ کرے۔

یاد رہے کہ انڈیا میں جب سے بی جے پی کی حکومت آئی ہے بہت سی ایسی تنظیمیں سرگرم ہوگئی ہیں جو یا تو براہ راست ہندو نظریاتی تنظیم آر ایس ایس سے وابستہ ہیں یا اس سے نظریاتی مماثلت رکھتی ہیں۔ خود آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھگوت کہہ چکے ہیں کہ ان لوگوں کو دوبارہ ہندو بنانے میں کوئی برائی نہیں  جبکہ بھارت خواتین کی عزتوں سے کھلواڑ پر بھی شہرت رکھتاہے حتیٰ کہ بھارتی دارلحکومت نئی دہلی کو ’ریپ سٹی‘ بھی کہ دیاجاتاہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -