چوک سرور شہد ،نجی سکول کے اساتذہ کا واجبات نہ ملنے پر بچوں سمیت احتجاج

چوک سرور شہد ،نجی سکول کے اساتذہ کا واجبات نہ ملنے پر بچوں سمیت احتجاج

چوک سرورشہید ،بھٹہ پور( نامہ نگار،نمائندہ پاکستان) تعمیر ملت پبلک سکول کے تین اساتذہ اویس، محمد شاہد، خرم ستار،اپنی اپنی کلاسوں کے بچوں کولے کرپلے کارڈ اٹھائے احتجاج کرتے ہوئے مرکزی چوک میں آگئے اور بچوں سے سکول مالک کے خلاف شدید نعرے بازی کرائی۔ اس (بقیہ نمبر30صفحہ12پر )

موقع پر تینوں اساتذہ نے صحافیوں کو بتایا کہ سکول مالک نے ان کی تین ماہ کی تنخواہیں روک رکھی ہیں۔اور الٹا ہمیں کہتا ہے۔ سکول چھوڑ کر چلے جاؤ۔ایک گھنٹہ کے مظاہر ہ کے بعد پرائیویٹ سکول یونین کے صدور چوہدری منیر احمد، اور چوہدری محمد زاہد نے آکر مذاکرات کے بعد مظاہر ہ ختم کرادیا۔سکول مالک محسن بخاری نے کہا کہ ہمیں پیف حکام سے تنخواہیں نہ ملی ہیں اسی وجہ سے لیٹ ہیں۔ دریں اثناء خانپور بگا شیر،مرادآباد،لنگر سرائے،بھٹہ پور میں موجود پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے سکول خواتین اساتذہ کا عرصے سے استحصال کر رہے ہیں۔بے روز گاری کے اس دور میں ماسٹرز اور گریجویٹ خواتین اساتذہ پییف کے سکولوں میں بہت کم تنخواہ پر پڑھانے پر مجبور ہیں۔صبح سے لے کر شام تک طلبا و طالبات کو پڑھانے والی خواتین اساتذہ کو ماہانہ تنخواہ صرف 2سے3ہزار دی جاتی ہے جبکہ پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن سے فی کس اساتذہ تعلیمی معیار کے مطابق 10000سے15000 وصول کئے جاتے ہیں اور خود سکول مالکان تنخواہ اور بچوں کی فیس کی مد میں لاکھوں روپے اپنی جیب میں ڈال رہے ہیں۔اگر کوئی خاتون ٹیچر اپنا حق مانگتی ہے تو بغیر نوٹس کے سکول سے فارغ کر دیا جاتا ہے خواتین اساتذہ نے سکول مالکان کی طرف سے کی جانیوالی اس حق تلفی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے متعلقہ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر