گھٹیا خام مال سے تیار شدہ ادویہ اور انجکشنز کی مارکیٹ میں فروخت شروع

گھٹیا خام مال سے تیار شدہ ادویہ اور انجکشنز کی مارکیٹ میں فروخت شروع

ملتان(وقائع نگار) محکمہ صحت کی ملی بھگت سے ادویات بنانے والے مافیا نے بھارت اور ایران سے ادویات بنانے کا سب سے سستا اور معیار میں کم خام مالی منگوا کر مختلف بڑی کمپنیوں کے ملتے جلتے ناموں سے ادویات و انجکشن تیار کرکے(بقیہ نمبر15صفحہ12پر )

مارکیٹ میں فروخت کرنا شروع کردی ہے۔ بڑے سرکاری اور پرائیویٹ ہسپتال بھی اصل اور دیرپا اثر والی میڈیسن خریدنے کی بجائے اس کم کوالٹی راء میٹریل والی میڈیسن خرید کر بڑا فائدہ لے رہے ہیں۔ معروف برانڈ کی ادویات سے بالکل ملتا جلتا نام اور اس میڈیسن میں استعمال ہونے والی فارمولا لکھ کر فروخت کیا جارہا ہے۔ ادویات کا معیار چیک کرنے والے سرکاری افسران بھی اس کام میں اپنا حصہ وصول کررہے ہیں۔ 20سے 25روپے میں تیار ہونے والہ انجکشن 300سے 500روپے میں فروخت کیا جارہا ہے۔ واضح رہے ڈاکٹر حضرات بھی تحائف اور بھاری اقوم وصول کرکے اپنی مافیا کی ناقص میٹریل سے تیار کی گئی میڈیسن مریضوں کو لکھ کر دے رہے ہیں۔ اور مریضوں کو یہ ادویات خریدنے کا بھی زبردستی مشورہ دیتے ہیں۔ ان میں انجکشن سیفٹائزون، سیفیکس زائم،سیٹاگلیٹن، ماکسی فلاک سین، لیو فلاک سین سمیت دیگر شامل ہیں۔ جبکہ لوکل راء میٹریل سے کھانسی کے سیرپ،انٹی بائیوٹیک، دردختم کرنے والی ادویات اور انٹی ایلسر ادویات کی نقل بھی بہت بڑی تعداد میں تیار کی جارہی ہیں۔ جو مریض مارکیٹ سے خرید نے پر مجبور ہیں۔ یہاں یہ بات واضح رہے کہ اس انکشاف پر وزیراعلیٰ کے حکم پر آپریشن بھی ان کمپنیوں کے خلاف کیا جارہا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر