این جی او پاک سویڈش ٹیچرز ایسوسی ایشن تعلیم کے نام پر کروڑوں روپے ہڑپ کر گئی

این جی او پاک سویڈش ٹیچرز ایسوسی ایشن تعلیم کے نام پر کروڑوں روپے ہڑپ کر گئی

لاہور(خبرنگار) مختلف ناموں سے این جی اوز قائم کر کے بھٹہ مزدوروں کے بچوں اور تعلیم و تربیت کا جھانسہ دے کر بڑے پیمانے پر لوٹ مار کرنے والے سب سے بڑے گروہ میں پاک سویڈش ٹیچرز ایسوسی ایشن کے نام سے این جی او نے کروڑوں روپے ہتھیائے ہیں۔ اس میں لاہور سمیت پنجاب بھر میں واقع 20 لاکھ سے زائد بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیم و تربیت کے نام پر مختلف این جی اوز نے جھانسہ دینے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔ جس میں گزشتہ چند سالوں سے ان این جی اوز میں پاک سویڈش ٹیچرز ایسوسی ایشن نامی ایک انٹرنیشنل این جی او نے 10 لاکھ سے زائد بچوں کو تعلیم و تربیت دینے کے نام پر لوٹ مار کا سلسلہ شروع کیا۔ جس میں پی ایس ٹی این این جی او نے سب سے پہلے لاہور میں اور پھر دوسرا بڑا قصور میں اور پھر شیخوپورہ میں اپنے دفاتر قائم کیے۔ جس کے بعد اس این جی او نے اپنی مختلف برانچیں فیصل آباد، گوجرانوالہ اور اوکاڑہ سمیت جنوبی پنجاب میں بھی قائم کی ہیں اور اس پی ایس ٹی این جی او کے چیف ایگزیکٹو ہارون میکل اور اس کے ساتھیوں عبدالقیوم اور محمد سمیروغیرہ نے 160ملین کا فراڈ کیا۔ جس میں چند سال قبل لاکھوں بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیم و تربیت دینے کے نام پر جھانسہ دیا گیا اور اس میں پی ایس ٹی این جی او نے باقاعدہ لاہور سمیت شیخوپورہ، قصور، گوجرانوالہ سمیت دیگر بڑے بڑے شہروں میں سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں سے زبانی اور تحریری معائدے بھی کیے جس میں بھٹہ مزدوروں کے بچوں کی جعلی انرولمنٹ کروائی گئی جس پر بھٹہ مزدوروں کی تنظیموں نے نیب، ضلعی حکومتوں اور وزارت محنت سمیت محکمہ اینٹی کرپشن کو الگ الگ درخواستیں دیں جس پر نیب نے سال 2012 ء میں پی ایس ٹی این جی او سمیت بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیمی سہولتیں دینے کے نام سے قائم مختلف این جی اوز کے خلاف تحقیقات شروع کیں تو مختلف ممالک سے منگوائے گئے 160 ملین سے زائد کا فراڈ سامنے آیا۔ چیف ایگزیکٹو ہارون میکل نامی شخص جو کہ بھٹہ مزدوروں کی فلاح و بہبود اور ان کے بچوں کو تعلیمی سہولیات دینے کے حوالے سے کام کرتا تھا اور اس نے 1979 سے اس این جی او کی رجسٹریشن کروا رکھی تھی۔ نیب کی جانب سے کئی گئی اب تک کی تحقیقات کے مطابق پی ایس ٹی این جی او کا چیف ایگزیکٹو ہارون میکل اور اس این جی او کا جنرل سیکرٹری محمد سمیر الیاس گزشتہ ڈیڑھ سال سے نیب کے ہاتھوں گرفتار ہیں جس میں ملزمان نے دوران تفتیش 160 ملین سے زائد کا فراڈ کا انکشاف کیا ہے جو کہ انٹرنیشنل این جی او کا جھانسہ دے کر مختلف ممالک سے بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیمی سہولیات دینے کے نام سے منگوائے گئے اور ان میں سے 4 کروڑ 86 لاکھ کا فراڈ بھی سامنے آیا ۔ نیب حکام کا کہنا ہے کہ اس گرفتار ملزم نے 4 کروڑ 86 لاکھ کی رقم اپنے اکاؤنٹ میں ٹرانسفر کی تھی اور بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیم و تربیت کی بجائے بڑے پیمانے پر رقم خرد برد کی گئی۔ نیب کے ترجمان کاکہنا ہے کہ بھٹہ مزدوروں کے بچوں کو تعلیم و تربیت کے نام پر پکڑے جانے والے فراڈ کی مزید تحقیقات جاری ہیں۔

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...