خیبر پختونخوا اسمبلی میں خواتین ارکان کافنڈزنہ ملنے پراحتجاج

خیبر پختونخوا اسمبلی میں خواتین ارکان کافنڈزنہ ملنے پراحتجاج

پشاور(اے این این ) خیبر پختونخوا اسمبلی میں حکومت اورحزب اختلاف کی خواتین ارکان کافنڈزنہ ملنے پراحتجاج، کورم کی نشاندہی پرپیپلزپارٹی اورجماعت اسلامی کے ارکان کے درمیان تلخ کلامی ،گالم گلوچ،ڈپٹی سپیکر مہر تاج روغانی نے اجلاس ملتوی کردیا۔جمعرات کو خیبر پختونخوا اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی سپیکر مہر تاج روغانی کی صدارت میں شروع ہوا۔ (ن) لیگ کی خاتون ایم پی اے ثوبیہ اور پی ٹی آئی کی خاتون ایم پی اے نے فنڈ نہ ملنے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اجلاس کا بائیکاٹ کیا ۔ ان کا موقف تھا کہ خواتین کے ساتھ زیادتی ہو رہی ہے، ان کو فنڈ نہیں دیا جا رہا تاہم خواتین ارکان کے بائیکاٹ کے بعد حکومتی ارکان انہیں منا کر واپس ایوان میں لے آئے۔ اجلاس میں پی پی پی کے ایم پی اے صاحبز ادہ ثناء اللہ نے کورم کی نشاندہی کی جس پر جماعت اسلامی کے ایم پی اے محمد علی نے ڈپٹی سپیکر کو اجلاس جاری رکھنے کا کہا تو دونوں کے درمیان تلخ کلامی ہو گئی اور انہوں نے ایک دوسرے کو گالیاں دیں جس پر ڈپٹی سپیکر نے اجلاس ملتوی کر دیا۔

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...