ڈی ایچ کیو ہسپتال شیخوپورہ میں ناقص بلڈ ٹرانسفیوژن سیٹوں کی سپلائی کا انکشاف

ڈی ایچ کیو ہسپتال شیخوپورہ میں ناقص بلڈ ٹرانسفیوژن سیٹوں کی سپلائی کا انکشاف

 شیخوپورہ(بیورورپورٹ)ابھی لاہور کے ہسپتالوں میں جعلی ہارٹ سٹنٹ کے فروخت کی بازگشت تھمی نہ تھی کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال شیخوپورہ میں انتہائی ناقص اور دو نمبر بلڈ ٹرانسفیوژن سیٹوں کی سپلائی کا سکینڈل منظر عام پر آگیا ہے جس پر ایم ایس ڈاکٹر مسز شہناز نسیم نے فوری طور پر ان سیٹوں کے استعمال پر پابندی عائد کردی ہے اور یہ سیٹ سپلائی کرنے والی لاہور کی ایک فرم کو تحریری طور پر آگاہ کیا ہے کہ فوری طورپر ان سیٹوں کو تبدیل کردیا جائے جن میں خون جم جاتا ہے بصورت دیگر کمپنی کی انتظامیہ کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ محکمہ صحت کے ذرائع نے بتایا ہے کہ تقریباً ایک سال قبل ہسپتال میں ان ڈورمریضوں کو خون دینے کیلئے 10ہزار بلڈ ٹرانسفیوژن سیٹ لاہور کی ایک فرم کو سپلائی کرنے کا آرڈر دیا گیا تھا جن کی سپلائی پر ان سیٹوں کو ہسپتال کے مختلف شعبوں میں تقسیم کیا گیا تو پتہ چلا کہ کئی موت و حیات کی کشمش میں مبتلا مریضوں کو جب خون کی سپلائی کیلئے یہ ٹرانسفیوژن سیٹ استعمال کئے گئے تو ان میں خون منجمد ہوجاتا تھا اور مریض کو خون کی سپلائی بند ہوجاتی تھی جس پر کئی وارڈوں میں مریضوں کے ورثاء نے احتجاج کیا تو ایم ایس نے فوراً کارروائی کرتے ہوئے ان سیٹوں کے استعمال پر پابندی عائد کردی ہے۔

ناقص بلڈ ٹرانسفیوژن سیٹوں کا انکشاف

مزید : صفحہ اول