قبائلی کو غیر قانونی حراست میں رکھنے پر کمانڈنٹ سے جواب طلب

قبائلی کو غیر قانونی حراست میں رکھنے پر کمانڈنٹ سے جواب طلب

پشاور (نیوزرپورٹر)پشاور ہائی کورٹ نے قبائلی شہری کو غیر قانونی حراست میں رکھنے کے الزام میں کمانڈنٹ محسود سکاوٹس فورٹ سلوپ باڑہ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب مانگ لیا ہے ۔ نوٹس گزشتہ روز پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحییٰ آفریدی اور جسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو کرنی بنچ نے تفصیل آفریدی اور سینئر وکیل لطیف آفریدی کی وساطت سے دائر عابد الرحمٰن کی رٹ کی سماعت کے بعد جاری کیا ۔ عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار غیر قانونی حراست میں رکھے جانے والے قبائلی شہری منصف علی خان کا بھائی ہے ۔ رٹ میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ منصف علی خان کو 26 جون 2015 کو پولیٹیکل انتظامیہ باڑہ خیبر ایجنسی نے زبردستی بغیر کسی جرم کے حراست میں لیا جسے بعد ازاں 5 اگست 2016 کو محسود سکاوٹس فورٹ سلوپ کے حوالے کر دیا گیا اور تاحال انہی کی حراست میں ہے ۔ عدالت نے دلائل سننے کے بعد کمانڈنٹ محسود سکاوٹس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے زیر حراست شہری کے حوالے سے تفصیلی جواب مانگ لیا ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...