پنجاب حکومت اور ترک کمپنی کے درمیان بہاولپور میں 100 میگا واٹ کا سولر پاور پلانٹ لگانے کا معاہدہ طے پاگیا

پنجاب حکومت اور ترک کمپنی کے درمیان بہاولپور میں 100 میگا واٹ کا سولر پاور ...

لاہور(ویب ڈیسک)پنجاب حکومت اورترکی کی معروف توانائی کی کمپنی ذورلوانرجی ہولڈنگ کے مابین قائداعظم سولرپارک بہاولپور میں100میگاواٹ کے سولرپاور پلانٹ لگانے کا معاہدہ ہوگیا،  دستخط کی تقریب ماڈل ٹاؤن میں  ہوئی،وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔پنجاب حکومت کی جانب سے سیکرٹری توانائی اسدالرحمان گیلانی جبکہ ترک کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسرعمریونگل نے معاہدے پر دستخط کیے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے ترک کمپنی ذورلوانرجی ہولڈنگ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کو قائداعظم سولر پارک بہاولپورمیں اراضی ایوارڈ کی دستاویزات کا سرٹیفکیٹ بھی دیا۔

معاہدے کی روسے ترکی کی کمپنی قائد اعظم سولر پارک بہاولپور میں 100 میگاواٹ کاشمسی توانائی کا منصوبہ لگائے گی اوریہ منصوبہ 6ماہ کی ریکارڈ مدت میں مکمل ہوگا۔6سینٹ فی یونٹ کے ٹیرف سے لگنے والے اس منصوبے سے عوام کو بجلی سستی ملے گی۔صوبائی وزراءڈاکٹر عائشہ غوث پاشا،چوہدری شیر علی، ترکی کے قونصل جنرل سردار ڈینز اورترک وفد کے اراکین بھی اس موقع پر موجود تھے۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت اورترک کمپنی کے مابین طے پانے والا معاہدہ خوش آئندہے اوراس معاہدے کے تحت پنجاب حکومت اور ترک کمپنی باہمی اشتراک سے 100میگاواٹ کا سولر پاور پلانٹ لگارہے ہیں۔ذورلو انرجی ترکی کی توانائی کی معروف کمپنی ہے اوراسے توانائی کے شعبے میں بڑی مہارت حاصل ہے۔ہم ترک کمپنی کے تجربے اور مہارت سے فائدہ اٹھائیں گے۔یہ کمپنی مزید سرمایہ کاری کرنے کیلئے بھی تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے اپنے وسائل سے پہلے ہی یہاں 100 میگاواٹ کا سولر پاورپلانٹ لگایاہے جس سے بجلی نیشنل گرڈ میں شامل ہورہی ہے۔ تحریری طور پر اتفاق کیاگیا ہے کہ یہ منصوبہ 6 ماہ میں مکمل ہوگا تاہم میں نے کہا ہے کہ اس منصوبے کو 4ماہ میں مکمل کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہا  پنجاب حکومت نے دھرنوں اور رکاوٹوں کے باوجود قائداعظم پاسولر پارک بہاولپور میں ملک کی تاریخ کا پہلا100 میگاواٹ کا شمسی توانائی کا منصوبہ ریکارڈ مدت میں مکمل کیا۔ نیپرا کا سولرکاٹیرف اس وقت 17 سینٹ فی یونٹ تھا اور ہمارے اس منصوبے نے نیپرا کو ٹیرف 14 سینٹ پر لانے پر مجبور کیا۔ اب ترکی کی کمپنی کے اشتراک سے 100 میگاواٹ کا سولر پاور پلانٹ 6 سینٹ فی یونٹ کے ٹیرف پر لگ رہا ہے جبکہ اس وقت اس کا نیپرا کا ٹیرف 10.8 سینٹ ہے۔ یقینا نیپرا کو اب اپنا ٹیرف مجبوراً مزید کم کرنا پڑے گا۔ نیپرا نے بطور ادارہ اپنی پالیسیوں کے باعث توانائی کے منصوبوں کو برباد کرنے اور ان میں تاخیر پیدا کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ نیپرا کا ان منصوبوں کیلئے ٹیرف 10 سینٹ فی یونٹ تھا جبکہ گیس کے یہ منصوبے ساڑھے 6 سینٹ فی یونٹ ٹیرف پر لگ رہے ہیں جس سے یقینا عوما کو بجلی سستی ملے گی اور اس ملک پر کرپشن کا لدا ہوا 70 سالہ بوجھ کم ہوگا۔ میں نے ان منصوبوں کی تیزی سے تکمیل کیلئے دوست ملک کے رہنماﺅں کے گھٹنوں کو ہاتھ لگایا اور میں نے یہ صرف اپنے ملک و قوم کیلئے کیا اور آئندہ بھی کروں گا۔ انہوں نے کہا ہم فرشتے نہیں لیکن اس کے باوجود گزشتہ ساڑھے تین برس کے دوران محنت سے توانائی منصوبوں پر کام کیا گیا ہے جس سے نیپرا بھی ٹیرف میں کمی کرنے پر مجبور ہوا ہے جبکہ ماضی میں ٹیرف میں اضافہ کرکے غریب قوم کو لوٹاگیا اور منصوبوں میں غیر ضروری طور پر تاخیر کی گئی۔

مزید : بزنس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...