بھارتی سپریم کورٹ نے گائے کی قربانی پر پور ے ملک میں پابندی لگانے کی درخواست مسترد کر دی

بھارتی سپریم کورٹ نے گائے کی قربانی پر پور ے ملک میں پابندی لگانے کی درخواست ...
بھارتی سپریم کورٹ نے گائے کی قربانی پر پور ے ملک میں پابندی لگانے کی درخواست مسترد کر دی

نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی سپریم کورٹ نے انصاف کا بول بالا کرتے ہوئے پورے ملک میں گائے کی قربانی پر پابندی لگانے سے متعلق انتہا پسند ہندوﺅں کی پٹیشن خارج کر دی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق انتہا پسند ہندو کی جانب سے بھارتی سپریم کورٹ میں گائے کی قربانی پر ملک بھر میں پابندی عائد کرنے کیلئے درخواست دائر کی گئی جس پر سپریم کورٹ نے درخواست کو مسترد کر تے ہوئے خارج کر دیاہے ۔بھارت کی 29میں سے صرف 8ریاستوں میں گائے کی قربانی کی اجازت ہے جبکہ باقیوں میں انتہا پسند ہندوﺅں نے پابندی لگا رکھی ہے اور اسی حوالے سے بھارتی سپریم کورٹ کا کہناتھا کہ ہم ریاستی قوانین میں مداخلت نہیں کر سکتے ،یہ صوبے کا اختیار ہے کہ وہ پابندی لگانا چاہتے ہیں یا نہیں ۔

ہندو مذہب میں گائے کو ’ماں‘سمجھا جاتاہے اور اس کی قربانی کو مذہب کیخلاف مانا جاتاہے اور اس لیے بھارت میں گائے کی قربانی کو ختم کرنے کیلئے کئی تحاریک بھی چلائی جارہی ہیں ۔بھارت میں مسلمان ،عیسائی اور ہندوﺅں کی کچھ نچلے درجے کی ذاتیں گائے کا گوش کھانا پسند کرتی ہیں لیکن کئی صوبوں میں پابندی کے باعث یہ عام میسر نہیں ۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...