عرب دنیا کا وہ ملک جہاں سے شرعی نظام ختم کرنے کی تیاری مکمل کرلی گئی، نیا ہنگامہ برپاہوگیا

عرب دنیا کا وہ ملک جہاں سے شرعی نظام ختم کرنے کی تیاری مکمل کرلی گئی، نیا ...
عرب دنیا کا وہ ملک جہاں سے شرعی نظام ختم کرنے کی تیاری مکمل کرلی گئی، نیا ہنگامہ برپاہوگیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک)روس نے بھی شام میں وہی غلطی دہرا دی ہے جو عراق پر قبضے کے بعد امریکی صدر بش نے کی تھی۔ روس نے شام پر اپنا تیارکردہ آئین مسلط کرنے کی کوشش کی جس پر شامی اپوزیشن کی طرف سے اسے کھری کھری سنا دی گئیں۔ بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق شامی حکومت اور باغیوں کے مابین روس کی ثالثی میں قازقستان کے دارالحکومت آستانہ میں مذاکرات جاری ہیں جن میں باغیوں کی نمائندگی محمد الوش کر رہے ہیں۔ روس نے آئین کا مسودہ انہی مذاکرات کے ایک اجلاس میں پیش کیا جو عربی زبان میں تحریر کیا گیا تھا۔ اس پر شامی اپوزیشن نے شدید ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے روسی نمائندے کو خبرد ار کر دیا کہ آئندہ ایسی غلطی مت کرنا جو صدام حسین کو اقتدار سے ہٹانے کے بعد صدر بش نے کی تھی۔

’اب جو بھی کفیل غیرملکی ملازمین کے ساتھ یہ کام کرے گا فوی بھاری جرمانہ کریں گے‘ بالآخر سعودی عرب میں غیر ملکیوں کا سب سے بڑا مطالبہ پورا ہوگیا، حکومت نے اپنے ہی شہریوں کے خلاف شاندار اعلان کردیا

رپورٹ کے مطابق اس دستاویز کے متعلق روسی وزیرخارجہ سرگئی لاروف کا کہنا تھا کہ ”آئین کا یہ مسودہ شامی حکومت، اپوزیشن اور علاقائی طاقتوں کی تجاویز کی بنیاد پر روسی ماہرین نے تیار کیا تھا۔“اس آئین میں تحریر کیا گیا تھا کہ ”شام کا صدر 7سال کے عرصے کے لیے منتخب کیا جائے گا اور اس دوران اس کے انتخاب کے لیے دوبارہ الیکشن نہیں کروایا جائے گا۔ ملک کی پارلیمنٹ 2چیمبرز پر مشتمل ہو گی اور ایسا قانون لاگو کیا جائے گا جس کی بنیاد اسلامی شرعی قوانین نہیں ہوں گے۔“

مذاکرات میں شامل اپوزیشن وفد کے رکن یحییٰ العریدی کا کہنا تھا کہ ”روس کی طرف سے شام کے آئین کا مسودہ پیش کیے جانے پر ہم نے ان کے نمائندے سے کہا کہ اپنے ملک کا آئین بنانے کا حق صرف شامی باشندوں کے پاس ہے اور وہی بنائیں گے۔عراق میں امریکہ کے اس تجربے کے نتائج سب کے سامنے ہیں۔جب کسی ملک کا آئین کسی دوسرے ملک کی طرف سے لکھا جاتا ہے تو وہ سیاسی طور پر قابل عمل نہیں ہوتا۔“ تاہم یحییٰ العریدی نے روس کے تجویز کردہ آئین کے مندرجات کے متعلق بتانے سے انکار کر دیا۔

مزید : عرب دنیا