’’رئیس ‘‘کے مقابلے میں’’ قابل‘‘ کی شکست ،راکیش روشن نے’’ دھاندلی‘‘کا الزام لگا تے ہوئے ایسی باتیں کہہ دیں کہ بھارتی فلم انڈسٹری میں نیا ہنگامہ کھڑا ہو گیا

’’رئیس ‘‘کے مقابلے میں’’ قابل‘‘ کی شکست ،راکیش روشن نے’’ دھاندلی‘‘کا ...

ممبئی(ڈیلی پاکستان آن لائن) رواں ہفتے ریلیز ہونے والی2بڑی بھارتی فلموں میں باکس آفس پر شاہ رخ اور پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان کی فلم ’’رئیس ‘‘ نے ڈبل کمائی کر کے ہرتیک روشن کی فلم ’’قابل‘‘ کو ریلیز کے دوسرے روز ہی چاروں شانے چت کر دیا تھا ،رئیس کے ہاتھوں ’’قابل‘‘کی دھلائی ہونے پر ہرتیک روشن کے والد ، فلم ’’قابل‘‘کے پرڈیوسر اور ماضی کے مشہور اداکار راکیش روشن نے بھی ’’سیاست دانوں ‘‘ کی طرح ’’دھاندلی ‘‘ کا الزام لگا تے ہوئے کہا ہے ان کی ریلیز ہونے والی فلم’’قابل‘‘ کے ساتھ ایگزی بیٹر ز نے نا انصافی کی ہے ،بھارتی ایگزی بیٹرز  کو کسی بھی بڑے پرڈیوسر اور ڈائریکٹر کے سامنے جھکنے یا بلیک میل ہونے کی ضرورت نہیں ہوتی ،وہ اگر چاہیں تو بڑے سے بڑے مینو فیکچرز کو گھٹنوں کے بل جھکنے پر مجبور کر سکتے ہیں۔

بھارتی نجی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے مطابق بھارت میں ایک ہی روز ریلیز ہونے والی 2بڑی فلموں شاہ رخ خان کی ’’رئیس‘‘ اور ہرتیک روشن کی ’’قابل‘‘ میں مقابلہ جاری ہے اور اس جاری ’’ملاکھڑے‘‘ میں کمائی کے لحاظ سے’’ رئیس‘‘ کا پلڑا واضح برتری کے ساتھ بھاری دکھائی دے رہا ہے، لیکن وہیں پر ’’قابل ‘‘ کے پرڈیوسر اور ڈائریکٹر راکیش روشن نے کہا ہے دونوں فلموں کی ایک ساتھ ریلیز کا معاملہ ایگزی بیٹر ز کے سامنے رکھا گیا تو انہوں نے وعدہ کیا تھا کہ وہ دونوں فلموں کو مساوی سکرین دیں گے لیکن ریلیز پر ’’رئیس ‘‘کو 60فیصد اور ’’قابل‘‘ کو 40فیصد سینما ہاؤسز مل سکے ،جو کہ وعدہ خلافی اور میرے ساتھ نا انصافی ہے ۔انہوں نے کہا کہ جو ہونا تھا وہ ہو گیا لیکن مستقبل میں ایسا نہیں ہونا چاہئے ،ایگزی بیٹر کے ساتھ دونوں فلموں کو برابر سکرین دینے کی بات ہوئی تھی ،میں نے رئیس سے زیادہ سینماء ہاوسز  تو نہیں مانگے تھے ،پھر مجھے کم جگہ کیوں ملی؟ایگزی بیٹر زکے لئے دونوں فلمیں ’’بچوں‘‘ کی طرح ہیں تو ایک ’’بچے ‘‘ سے کم محبت کیوں؟میں نے ایسی کیا غلطی کی تھی جو ’’قابل‘‘ کے ساتھ ایسا سلوک کیا گیا ؟۔

راکیش روشن کا کہنا تھا کہ میں ہاتھ جوڑ کر ایگزی بیٹر ز سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ ایسا نہ کریں ، میری فلم کے ساتھ جو ہونا تھا وہ ہو گیا مگر مستقبل میں ایسا تعصب نہیں ہونا چاہئے،ایگزی بیٹرز تعصب کرتے ہیں اس لئے ایسا ہوتا ہے، معلوم نہیں کہ وہ کس دباؤ میں ایسا کرتے ہیں؟۔انہوں نے کہا کہ اگر کسی فلم کا ڈائریکٹر یا پرڈیوسرایگزی بیٹرز کو دھمکی دیتا ہے کہ اگر اسے زیادہ یا من پسند سینماء ہاؤسز نہ دیئے گئے تو میں اگلی فلم اسے نہیں دوں گا تو اس دھمکی  سے ایگزی بیٹر ز کو ڈرنے کی ضرورت نہیں کیونکہ وہ ان فلم والوں سے زیادہ بڑے ’’ کھیل ‘‘کے کھلاڑی ہیں ،ان میں بہت اتحاد ہے ،وہ اگر فلم پرڈیوسر اور ڈائریکٹر کو کہہ دیں کہ آپ کی فلم ہم ریلیز نہیں کریں گے تو کیا ڈائریکٹراور پرڈیوسر اپنی فلم کو ریلیز کر سکتا ہے؟ بالکل نہیں کر سکتا،ڈائریکٹر کو گھٹنے پر جھک کر اپنی فلم ریلیز کروانی پڑے گی۔

مزید : تفریح

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...