حکومت نے ایک کروڑنوکریاںاور50لاکھ گھردینے کاوعدہ کیا،بتایا جائے جنوبی پنجاب کے لوگوں کوکتنے گھردیئے:سراج الحق

حکومت نے ایک کروڑنوکریاںاور50لاکھ گھردینے کاوعدہ کیا،بتایا جائے جنوبی پنجاب ...
حکومت نے ایک کروڑنوکریاںاور50لاکھ گھردینے کاوعدہ کیا،بتایا جائے جنوبی پنجاب کے لوگوں کوکتنے گھردیئے:سراج الحق

  

ملتان(ڈیلی پاکستان آن لائن)جماعت اسلامی کے امیر سینیٹرسراج الحق نے کہا ہے کہ صوبہ جنوبی پنجاب یا بہاولپور حکومت کی کسی ترجیح میں نہیں ،صوبے کے لیے محض2  چار دفاتر بنا دینا کافی نہیں،حکومت کے مصنوعی اقدامات سے جنوبی پنجاب کے عوام کو ان کا حق نہیں ملے گا، حکومت نے ایک کروڑنوکریاں اور50لاکھ گھردینے کاوعدہ کیا تھا،بتایا جائے حکومت نے جنوبی پنجاب کے لوگوں کوکتنے گھردیئے؟۔

 ملتان میں  میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا کہ ذاتی مفادات کے لیے حکومت اور اپوزیشن ایک ہو جاتے ہیں، اسلام اور نظریہ پاکستان کے خلاف اپوزیشن بھی حکومت کی ہمنوا بن جاتی ہے،شراب پر پابندی کے خلاف اور آسیہ مسیح کی رہائی کے لیے موجودہ اور سابقہ حکمران پارٹیاں ایک پیج پر تھیں،موجودہ حکومت سابقہ حکومتوں کے نقش قدم پر چل رہی ہے اس کا اپنا کوئی وژن نہیں، قرضوں اور خیرات سے ملک نہیں چلتے ،حکومت کی معاشی اصلاحات ڈنگ ٹپاؤ پالیسی کے گرد گھومتی ہیں، اندھیر نگری اور چوپٹ راج سے قوم بے زار ہے ،جس طرح سابقہ حکومتوں نے ملک و قوم کا وقت ضائع کیا ،اسی طرح یہ حکومت چھ ماہ میں سوائے وعدوں اور نعروں کے کچھ نہیں کر سکی ۔انہوں نے کہا کہ حکومتوں کی عدم توجہی سے ملک میں غربت ، جہالت اور لوڈشیڈنگ کے اندھیرے ہیں،تھر میں بچے بھوکے مر رہے ہیں اور حکمران کہتے ہیں کہ ان غریبوں کا مرنا معمول کی بات ہے جسے میڈیا نے خوامخواہ ایشو بنا دیا ہے،یہ ظالمانہ نظام ظالم جاگیرداروں ، وڈیروں اور بے رحم سرمایہ داروں کا ہے جس میں غریب کا کوئی پرسان حال نہیں،ساہیوال کا دلخراش سانحہ حکمرانوں کی بے حسی اور ظلم کا منہ بولتا ثبوت ہے،مسلم لیگ کی حکومت نے ماڈل ٹاؤن میں 14 افراد کو شہید کردیا ، پیپلز پارٹی کی حکومت میں کراچی میں ایک پولیس افسر نے 4 سو معصوم لوگوں کو قتل کیا,حکمرانوں کے نزدیک عوام کیڑے مکوڑوں سے زیادہ اہمیت نہیں رکھتے ,حکومت چاہتی ہے عوام ساہیوال کادلخراش واقعہ بھول جائیں،مولانا سمیع الحق اور ایس پی  طاہر داوڑ کے قاتلوں کا آج تک پتہ نہیں چل سکا،بجلی،گیس اورپٹرول کی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا،ملکی معیشت کمزور اور روپے کی قدرمیں کمی ہوئی، حکومت نے 5ماہ میں فلاحی ریاست بنانے کیلئے کیا اقدامات کیے؟حکومت وعدے کرتی ہے مگرنبھاتی نہیں۔سینیٹر سراج الحق کا کہنا تھا کہ موجودہ حکمرانوں کو ماضی کے حکمرانوں کے انجام سے عبرت پکڑنی چاہیے ،قرضوں اور خیرات کی معیشت سے کوئی تبدیلی نہیں آنے والی ،باہر سے قرضے لے کر معیشت درست نہیں ہوسکتی ،اب تک قومی اسمبلی میں قانون سازی کی بجائے شور شرابہ ہواہے ،حکومت اور اپوزیشن کے درمیان جاری دنگل کو برپا کرنے میں حکومت نے بھر پور حصہ لیاہے۔

سراج الحق کا کہناتھا کہ جنوبی پنجاب کے رہنماؤں نے ن لیگ میں فارورڈ  بلاک بنایا،فارورڈبلاک بنانے والے آج پی ٹی آئی میں شامل ہیں۔ایک سوال کے جواب میں سراج الحق نے کہاکہ حکومت کے خلاف گرینڈ الائنس کی ابھی تک صرف باتیں ہیں، اگر الائنس بنا بھی تو اس کے مقاصد اور ایجنڈے کا جائزہ لے کر اس میں جانے یا نہ جانے کا فیصلہ کریں گے ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ قوم 5 فروری کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر جوش وجذبے سے منائے گی اور کراچی سے چترال تک پورے ملک میں یکجہتی کشمیر ریلیاں نکالی اور جلسے اور مظاہرے کیے جائیں گے ،مظلوم کشمیریوں کا ساتھ دینا تکمیل پاکستان کا ایجنڈا اور ہمارا قومی فریضہ ہے،کشمیریوں کا ساتھ دینا ہم پر فرض بھی ہے اور قرض بھی،قوم اس فرض اور قرض کو ادا کرے گی،حکومت کشمیریوں کے خلاف بھارتی ظلم کو عالمی برادری کے سامنے اٹھائے اور کشمیر کی آزادی کے لیے ایک واضح لائحہ عمل دے، مسئلہ کشمیر پر حکومت کو مذمتی بیانات سے آگے بڑھنا ہوگا ،کشمیر کے مسئلہ کو دنیا بھر میں اجاگر کرنے کے لیے ایک نائب وزیر خارجہ کا تقرر کر کے وزارت خارجہ میں اور دنیا بھر میں پاکستانی سفارت خانوں میں الگ ڈیسک قائم کیے جائیں تاکہ مسئلہ کشمیر کے حل اور کشمیر کی آزادی کے لیے موثر انداز میں آواز اٹھائی جاسکے ۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ امریکہ کو افغانستان میں اپنی شکست تسلیم کرنا پڑی اور اس کا کریڈٹ افغانستان کے عوام کو جاتاہے جنہوں نے دنیا کی تین سپر پاورز کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کیا ۔ 

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور