اسلام آباد،آل پاکستان چیمبرز صدور کانفرنس کا انعقاد

  اسلام آباد،آل پاکستان چیمبرز صدور کانفرنس کا انعقاد

  



اسلام آباد (این این آئی) اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے آل پاکستان چیمبرز صدور کانفرنس منعقد کی جس میں چاروں صوبوں سے چیمبروں کے 47صدور نے شرکت کی۔ کانفرنس کے اختتام پر اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر محمد احمد وحید اور فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر میاں انجم نثار نے ایک علامیہ جاری کیا جس میں صنعتی و تجارتی سرگرمیوں کے بہتر فروغ اور معیشت کی بحالی کیلئے چیمبروں کے صدور نے متفقہ طور پر حکومت کو مندرجہ ذیل مطالبات پیش کئے۔ٹیکس اقدامات:13.25فیصد پالیسی انٹرسیٹ ریٹ کو کم کر کے سنگل ڈیجٹ تک لایا لائے۔ موجودہ غیر منصفانہ اور پیچیدہ ٹیکس نظام کو منصفانہ، سادہ اور آسان بنایا جائے، 17فیصد سیلز ٹیکس کو 10فیصد سے نیچے لایا جائے، تمام پیداواری شعبوں کیلئے مشینری، خام مال اور پارٹس کی درآمد پرٹیکسوں اور ریگولیٹری ڈیوٹیز میں کمی کی جائیں۔

پورے ملک میں صنعت و تجارت کیلئے ٹیکسوں و ڈیوٹیز کی یکساں شرح نافذ کی جائے، خام مال، انٹرمیڈیٹ مصنوعات اور مشینری کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی کم کی جائے، گرین فیلڈ پراجیکٹس کیلئے پلانٹ و مشینری کی درآمد پر فراہم کردہ سیلز ٹیکس سے استثنیٰ باقی صنعتوں کو بھی فراہم کیا جائے، تمام بیمار صنعتی یونٹوں کو بحالی کیلئے اسپیشل ٹیکس مراعات فراہم کی جائیں، صوبوں سے دہرے ٹیکس کو ختم کیا جائے اور پورے ملک میں سنگل فائلنگ کا طریقہ کار رائج کیا جائے۔ ٹیرف اقدامات: کاروبار کی لاگت کم کرنے کیلئے بجلی، گیس اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مناسب کمی کی جائے اور ٹیرف میں اضافہ کرنے کی بجائے حکومت گردشی قرضوں کو کم کرنے اور بجلی کمپنیوں کی ترسیل و تقسیم کے نقصانات کو کم کرنے پر توجہ دے، نئی سرمایہ کاری اور صنعتوں کی حوصلہ افزائی کیلئے کیلئے پالیسی ریٹ اور ٹیرف ریٹ کو کم از کم آئندہ پانچ سال کیلئے ایک سطح پر برقرار رکھا جائے، تیل سے مہنگی بجلی پیدا کرنے کی بجائے پانی اورقابل تجدید ذرائع سے سستی بجلی پیدا کرنے کی طرف توجہ دی جائے۔ر

مزید : کامرس