الیکشن میں خون پختونوں کا گرتا ہے ووٹ کسی اور کے نکلتے ہیں، افتخار حسین

الیکشن میں خون پختونوں کا گرتا ہے ووٹ کسی اور کے نکلتے ہیں، افتخار حسین

  



پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے عمران خان سے پہلے اپوزیشن ناراض تھی، آج اس سے اپنے اتحادی بھی ناراض ہیں،انتخابات کے دوران خون پختونوں کا گرتا ہے جبکہ بکسوں سے ووٹ کسی اور کے نکلتے ہیں، اس سے بدتر حالات بھی آئے تو مقابلہ کریں گے اور پختونوں کے حقوق کا تحفظ بھی کرتے رہیں گے۔ بٹ خیلہ میں منعقد ہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے میاں افتخار حسین نے کہا کہ باچا خان نے پختون قوم کو عدم تشدد کا فلسفہ دیا، خود بھی اس پر عمل کیا اور قوم کو بھی اکٹھا کیا،پختونوں کی ساڑھے چار ہزار سال تاریخ میں باچا خان نے ایک لاکھ رضا کاروں کی فوج تیار کی،ان کے افکار تھے کہ ہماری دھرتی غلام ہے ہم نے اس کو انگریز سے آزاد کرانا ہے۔انہوں نے کہا کہ ولی خان نے تمام ملک کے قوم پرست، ترقی پسند اور جمہوریت پسند لوگوں کو اکٹھا کیا اور سربراہی خان عبدالولی خان کو دی گئی، کوئی اس ملک میں مارشل لا کا مقابلہ نہیں کر سکتا تھا، ولی خان میدان میں نکلے اور جمہوریت کی جنگ لڑی،ولی خان کی کسی نے مانی ہوتی تو آج بنگلہ دیش جدا نہ ہوتا۔میاں افتخارحسین کا کہنا تھا کہ ولی خان کے جمہوریت پسند رویے کو سلام پیش کرتے ہیں،باچا خان جیسی شخصیت صدیوں میں پیدا ہوتی ہے، انہوں نے جو باتیں کیں وہ آج درست ثابت ہو رہی ہیں،آج ان کے افکار پر عمل کیا جاتا تو افغانستان میں بھی جنگ نہ ہوتی، دوسروں کی جنگ میں کودنے کی غلطی پاکستان کی تھی۔میاں افتخار حسین نے کہا کہ عمران خان سے پہلے اپوزیشن ناراض تھی، آج اس سے اپنے اتحادی بھی ناراض ہیں،آج پی ٹی آئی میں فارورڈ بلاک بن رہا ہے، عمران خان کا وقت پورا ہو چکا ہے، حکومت ختم ہونے کو ہے،پی ٹی آئی دھوکہ دہی سے اقتدار میں آئی، ہمارا مطالبہ ہے کہ شفاف الیکشن کرایا جائے،اگر انتخابات شفاف ہوں تو خیبرپختونخوا میں باچا خان کے خدائی خدمتگاروں سے کوئی بھی الیکشن نہیں جیت سکتا،پی ٹی آئی اور عمران خان کو بتانا چاہتا ہوں کہ ٹی وی بھی دیکھیں گے اور اخبار بھی دیکھیں گے، قوم کے تمام بچے میرے بچے ہیں اور میں میدان میں موجود ہوں، ہم وعدہ کرتے ہیں کہ ہم ہر قسم کے مقابلے کیلئے تیار ہیں۔

افتخار حسین

مزید : علاقائی