یتیم بچوں کی کفالت کرنا بہت بڑی سعادت ہے‘ خلیل الرحمان

  یتیم بچوں کی کفالت کرنا بہت بڑی سعادت ہے‘ خلیل الرحمان

  



تحت بھائی (تحصیل رپورٹر)کمیسٹ ایسوسی ایشن جمال پلازہ مردان کے سابق صدر حاجی خلیل ائر حمان نے کہا ہے کہ غریب یتیم بچوں کی کفالت کرنا بہت بڑی سعادت ہے۔ہر مسلمان کی اخلاقی اور دینی ذمہ داری ہے کہ وہ یتیم اور غریب بچوں کی کفالت کرے۔ ایسے ادارے اور افراد نہایت خوش قسمت ہیں جو غریب یتیم بچوں کی کفالت کررہے ہیں۔ہمارے ہاں بہت سی نجی تنظیمیں یتیم بچوں کی کفالت کا بیڑہ اٹھائے ہوئے ہیں ہمیں ایمان ہے کہ حقوق اللہ اور حقوق العباد انتہائی اہمیت کے حامل ہیں کیونکہ حقوق العباد کی معافی نہیں ہے۔ایک مسلم معاشرے میں بھی یتیم بچوں کی پرورش اور کفالت کرنا کسی چیلنج سے کم نہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے زمونگ جذبہ کمپلیکس مردان کی ایک سال مکمل ہونے کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہو ئے کیا اس موقع پر انہوں یتیم بچوں کے ہمراہ سالگرہ کی کیک بھی کا ٹا،تقریب سے زمونگ جذبہ ویلفیئر سوسائٹی مردان کے سرپرست اعلیٰ حاجی کفایت اللہ،چیئر مین محمد پرویز،جنرل سیکرٹری غنی رحمان،حافظ محمد اسما عیل،محمد فاروق،اسماعیل خان اور پارٹ آرگنائزیشن کے فیاض الاسلام نے بھی خطاب کی۔حاجی خلیل ائر حمان نے کہا کہ بے سہارا اور غریب یتیم بچوں کی مدد دینی اور اخلاقی فرض سمجھ کر کرتے رہیں گے اور ہر فردکی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اس کو دینی اور اخلاقی فرض سمجھ کر ادا کرے۔ غریب یتیم اور بے سہارا بچوں کی پرورش،انکی دیکھ بھال اور انکے علاج و معالجے میں ان کے ساتھ تعاون کرنا ایک اسلامی اور اخلاقی فریضہ ہے انہوں نے کہا کہ دین اسلام نے ہمیں بے سہارا اور یتیم بچوں کے حقوق کا درس دیا ہے اس پر عمل کرنا پوری انسانیت کا فرض ہے،محمد پرویز نے کہا کہ کہا کہ تمام اہل اسلام کے بہن بھائیوں سے مطالبہ ہے کہ غریب یتیم اور بے سہارا بیمار بچوں کے علاج و معالجے میں ہمارے ساتھ بھرپور تعاون کرے اور فلاحی و سماجی ادارے بھی اس کار خیر میں ہمارا ساتھ دیں اور ان بیمار غریب اور لاچار مستحق بچوں کی مدد میں اہم کردار ادا کریں تا کہ انسانیت کی خدمت ہو سکے انہوں نے کہا کہ غریب یتیم اور بے سہارا بچے بھی ہمارا مستقبل ہے ہمارے معاشرے کا حصہ ہے ایسے بچوں کا ساتھ دینا ہم سب کی اہم زمہ داری ہے اور انسانیت کی خدمت بھی ہے انہوں نے مزید کہا کہ عربت کا خاتمہ اور ایسے یتیم اور بے سہارا بچوں کی خدمت ہر پاکستانی کا فرض ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر