ڈیرہ، صوابی چارسدہ، بجٹ سازی میں بہتری لانے کے چارٹر آف ڈیمانڈ پیش

      ڈیرہ، صوابی چارسدہ، بجٹ سازی میں بہتری لانے کے چارٹر آف ڈیمانڈ پیش

  



ڈیرہ اسماعیل خان(بیورو رپورٹ)سی این بی اے نے پاکستان میں بجٹ سازی کے مروجہ عمل میں پائی جانیوالی خامیوں کی نشاندہی کیساتھ اس میں بہتری لانے کے چارٹر آف ڈیمانڈ پیش کر دیا۔بجٹ دستاویزات میں شفافیت لانے کیلئے مجوزہ ٹیکس اور اخراجات کے تمام اقدامات کی مکمل تفصیلات تک عوام کی رصائی ہونا لازم ہے۔ اسی حوالے سے ڈیرہ اسماعیل خان کے نجی ہوٹل میں ایک پریس کانفرنس کا انعقاد کیا گیا،جس میں میڈیا اینڈ سیکیورٹی ریسرچ آرگنائزیشن کے پروگرام آفیسر محمد منور خان نے میڈیا نمائندگان کو بتایا کہ سی این بی اے نے ہمیشہ ایسے معاملات اٹھائے جو بجٹ سازی کو بہتر اور موثر بنانے کے لیے حکومت کی توجہ کے متقاضی ہیں اور امید کی جاتی ہے کہ یہ چارٹر آف ڈیمانڈ اصلاحاتی ایجنڈے کو مزید آگے بڑھانے میں معاون ثابت ہو گا۔اس موقع پر موجودہ شبہ ابلاغیات کے طلبا اور سماجی تنظیموں کے نمائندگان نے چارڑر آف ڈیمانڈ میں شامل مطالبات کی بھرپور حمایت کی اور کہا کہ اس آواز کو ضلعی سطح پر اٹھانے میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے اور ہر سطح پر بجٹ سازی کے مروجہ عمل میں پائی جانیوالی خامیوں کی نشاندہی کیساتھ ساتھ اس میں بہتری لانے کیلئے تجویز کردہ سفارشات کو عام شہریوں تک پہنچایا جائیگا۔

صوابی(رپورٹ: محمد شعیب)سٹیزن نیٹ ورک فار بجٹ اکاونٹیبلٹی نے بجٹ سازی کی مروجہ طریقہ کار پر تحفظات کااظہار کر تے ہوئے بجٹ سازی کے عمل کو شفاف، عوامی رائے اور علاقائی ضروریات کے مطابق تر تیب دینے کے لئے چارٹر آف ڈیمانڈ پیش کر دیا۔ اس سلسلے میں صوبائی منیجر شمس الہادی نے کہا ہے کہ سالانہ بجٹ اگلے سال میں ہونے والی آمدنی اور اخراجات کا تخمینہ اور حکومت کے وژن کا آئنہ دار ہو تا ہے جس میں یہ بتایا جاتا ہے کہ محصولات جمع کرنے کے لئے کیا منصوبہ بندی کی گئی اور انہیں کن شعبوں میں ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائیگا۔ انہوں نے چارٹر آ ف ڈیمانڈ کے اہم نکات بتاتے ہوئے کہا کہ ترقیاتی منصوبہ بندی علاقوں کے ضروریات کے مطابق کی جانی چاہئے وفاقی حکومت ٹیکس دہندہ گان کے حقوق کے بل کو فوری طور پر منظور کر کے بجٹ دستاویزات میں شفافیت لانے کے لئے مجوزہ ٹیکس اور اخراجات کے تمام اقدامات کی مکمل تفصیلات فراہم کی جائے بجٹ دستاویزات سادہ، غیر تکنیکی اور اردو زبان میں تیار کی جائے اور اس کی تمام دستاویزات کو ایکسل جیسے فارمیٹ میں عام کیا جائے جو تجزیہ اور اعداد و شمار میں معاون ثابت ہو سکے چارٹر آ ف ڈیمانڈ میں مطالبہ کیا گیا کہ سالانہ بجٹ مارچ کے مہینے میں پارلیمنٹ میں بحث کے لئے پیش کیا جائے اور اس کی پوری جانچ پڑتال کے لئے متعلقہ کمیٹیوں کو بھیج دینا چاہئے بلواسطہ ٹیکسز کی شرح کو کم کیا جائے تاکہ کم آمدنی والے گروپس پر مثبت اثرات پڑ سکے سرکاری وزارتوں اور تنظیموں کی مالی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے سنگل ٹریثری اکاونٹ کا استعمال کیا جائے جس سے قرضوں کی لاگت کو کم کیا جا سکتا ہے انہوں نے کہا کہ خسارہ میں چلنے والے مختلف سرکاری اداروں میں بہتری لائی جائے اسی طرح ایف بی آر میں فوری اصلاحات کی جائے وزارتیں اپنے اخراجات کے تناظر میں آئندہ بجٹ کے ضروریات کا جائزہ لیں جب کہ صوابدیدی کٹوتیوں کی حوصلہ شکنی کی جائے۔

چارسدہ (بیو رو رپورٹ) سٹیزن نیٹ ورک فار بجٹ اکانٹی بلٹی نے پاکستان میں بجٹ سازی کے عمل پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پر بجٹ سازی کے عمل میں مزید بہتری لانے اور ملک کے تمام سٹیک ہولڈرز سمیت علاقائی ضرورت کے مطابق بجٹ تیار کرنے کے عمل پر زو ر دیا ہے۔اس حوالے سے چارسدہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سی این بی اے پارٹنر تنظیم سائبان ڈیولپمنٹ آرگنائیزیشن کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرمحمد عارف نے کہا کہ حکومت کو ہمیشہ بجٹ کی تیاری کے عمل سے قبل کسی بھی علاقہ یا وہاں کے عوام کے بنیادی مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے بجٹ تیار کرنا چاہئے۔اس حوالے سے ان کامزید کہنا تھا کہ ہم نے مختلف معاشی ماہرین کی رائے کے تجزیہ اور چند اہم اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد ایک چارٹر آف ڈیمانڈ تیار کیا گیا ہے جس پر عملدرآمد ہونے سے بجٹ سازی کے عمل میں مزید بہتری لائی جا سکتی ہے جس میں ترقیاتی منصوبہ بندی علاقوں کی ضروریات کے مطابق تیاری،وفاقی حکومت ٹیکس دہندگان کے حقوق کے بل کو فوری منظوری،،بجٹ دستاویزات میں شفافیت لانے کیلئے مجوزہ ٹیکس اور اخراجات کے تمام اقدامات کی مکمل تفصیلات فراہم کرنے،بجٹ دستاویزات سادہ،غیر تکنیکی اور اردو زبان میں تیار کی جائیں تاکہ ہر شہری کو آسانی سے سمجھ آسکے،اندرون و بیرون ملک شہریوں کے لئے بجٹ کی دستاویزات قابل رسائی بنانا،سالانہ بجٹ مارچ میں پارلیمنٹ میں بحث کیلئے پیش کرنا،بلواسطہ ٹیکسز کی شرح کو کم کرنا،سرکاری وزارتوں اور تنظیموں کی مالی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے سنگل ٹریثری اکاؤنٹ (ایس ٹی اے) کا استعمال کرنا اور خسارہ میں چلنے والے مختلف سرکاری اداروں میں بہتری لانے سمیت دیگر ڈیمانڈز شامل ہے۔اس موقع پر موجودحسن حساس، عامرفداء ایڈوکیٹ،رفیع اللہ،رفاقت بیگم،فہیمہ بیگم اور مختلف سیاسی شخصیات اور سماجی تنظیموں کے نمائندگان نے چارٹر آف ڈیمانڈ میں شامل مطالبات کی بھرپور حمایت کی اور کہا کہ اس آواز کو ضلعی سطح پر اٹھانے میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے اور ہر سطح پربجٹ سازی کے مروجہ عمل میں پائی جانیوالی خامیوں کی نشاندہی کیساتھ ساتھ اس میں بہتری لانے کیلئے تجویز کردہ سفارشات کو عام شہریوں تک پہنچایا جائیگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر