حج پیکج میں 1لاکھ 15ہزار روپے اضافے کا فیصلہ انتہائی مایوس کن ہے‘ سماجی حلقے

حج پیکج میں 1لاکھ 15ہزار روپے اضافے کا فیصلہ انتہائی مایوس کن ہے‘ سماجی حلقے

  



الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر) دینی فریضہ حج پیکج میں ایک لاکھ پندرہ ہزار روپے اضافے کا فیصلہ انتہائی مایوس کن ہے،فیصلے پر نظرثانی کرکے عازمین حج کو مناسب سہولیات فراہم کی جائے۔عوامی حلقوں کی اپیل۔حج 2020میں 1لاکھ پندرہ ہزاراضافے سے عازمین حج میں بے چینی کی لہر دوڑگئی ہیں حکومت گزشتہ سال کی پیکج کو اس سال بھی وہی پیکج نافذکرے۔مطالبہ۔حج دینی فریضہ اسلام میں مکہ مدینہ سارے دنیا کی مسلمان کیلئے مقدس ہیں اور ہر ایک کا دل چاہتا ہے کہ وہ حج عمرہ کرے مگر حکومت نے حج کو اتنا مہنگا کردیا ہے کہ غریب اور متوسط طبقہ کے لوگوں کی ادا کرنے سے باہر ہیں۔وزارت مذہبی امور کے وزیر کی عدم شرکت سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ بھی حاجیوں کیلئے آسانیاں پیدا کرنے کے حق میں ہیں۔حکومت کا گزشتہ ساک کا حج پیکج 4لاکھ36ہزار روپے تھے اس سال بھی وہی پیکج برقرار رکھیں تاکہ عازمین حج کو ادائیگی حج میں آسانی ہو۔ہر مسلمان کا اللہ کے گھر اور روضہ رسول ر حاضری کا شوق ہوتا ہے حکومت ان کیلئے آسانیاں یہ صیحح ہے کہ حج مالدار پر فرض ہے۔سرکار کی طرف سے مفت حج کرانے پر پابندی لگائے لیکن عام اور متوسط طبقہ کیلئے حج میں رکاوٹ ڈالنے سے باز آئے۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر