امن و امان کا قیام پولیس کی اولین ذمہ داری ہے: واحد محمود

  امن و امان کا قیام پولیس کی اولین ذمہ داری ہے: واحد محمود

  



ڈیرہ اسماعیل خان(بیورو رپورٹ) زمانہ امن میں منعقد ہونے والی تربیتی مشقیں ریاست کی رٹ قائم رکھنے والی فورسز کی بغیرکسی نقصان کامیابی میں اہم کردار ادا کرتی ہے، ڈی پی اوکا پولیس لائن میں مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے جاری تربیتی مشقوں کی فارمیشن کا جائزہ۔ تفصیلات کے مطابق ڈیرہ اسماعیل خان کے ضلعی پولیس سربراہ کیپٹن (ر) حافظ واحد محمود نے کہا ہے کہ درپیش چیلنچز سے بہتر طور پر نبرآزما پولیس فورس امن کی ضامن بن گئی ہے۔ زمانہ امن میں منعقد ہونے والے تربیتی مشقیں ہی عملی میدان میں ریاست کی رٹ قائم رکھنے والی فورسسز کی بغیر کسی نقصان کامیابی میں اہم کردار ادا کرتی ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے پولیس لائن ڈیرہ میں جاری مظاہرین کو منتشر کرنے کی تربیتی مشقوں کی تشکیل کا جائزہ لینے کے موقع پر پولیس افسران و جوانوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ پولیس کی تربیتی مشقوں میں شریک پولیس اہلکاروں کو ڈی پی او نے خود مختلف فارمیشن سیکھائے اور تربیتی مشقوں کے خلاف پر تشدد احتجاجی مظاہرین کو منتشر کرنے کی عملی کاروائی کے حوالے سے پولیس جوانوں کو مختلف مشقیں بھی کرائیں ۔ پولیس جوانوں کو عملی طور پر سکھایا گیا کہ کس قسم کی حکمت عملی سے طاقت کا کم سے کم استعمال کرکے مظاہرین کو منتشر کرنے کی ترکیب نکالی جائے۔ مشقوں کے دوران پولیس جوانوں کو مزاحمت کرنے والے افراد کے ساتھ بھرپور طریقہ سے نمٹنے کے لیے ان کے خلاف طاقت کے استعمال اور ان کی گرفتاری عمل میں لانے کے علاوہ پولیس کے ساتھ مزاحمت کے دوران زخمی ہونے والے افراد کو فوری طبی امداد فراہم کرنے اور مذاحمت کاروں کے حملے سے خود کو محفوظ رکھنے کی موثر احتیاطی تدابیر بھی سکھائی گئیں۔ پولیس لائن ڈیر ہ میں منعقدہ تربیتی مشقوں میں پولیس جوانوں کی طرف سے پیش کردہ عملی مظاہرہ کا جائزہ لیتے ہوئے ضلعی پولیس سربراہ نے ان تربیتی مشقوں کے اغراض و مقاصد کے حوالے سے بتایا کہ زمانہ امن میں منعقد ہونے والے مشقیں ہی عملی میدان میں ریاست کی رٹ قائم رکھنے والی فورسز کی بغیر کسی نقصان کامیابی میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ امن و امان کے قیام اور عوام الناس کی جان و مال کے تحفظ کی ذمہ داری صرف پولیس کی ہے۔ جس کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں گے اور حکومتی رٹ چیلنچ کرنے والوں کی کسی کو بھی اجازت نہیں دی جائے گی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر