نجی یونیورسٹی کے طلباء کا احتجاج اور پولیس تشدد ،جماعت اسلامی بھی میدان میں آگئی ،بڑا مطالبہ کردیا 

نجی یونیورسٹی کے طلباء کا احتجاج اور پولیس تشدد ،جماعت اسلامی بھی میدان میں ...
نجی یونیورسٹی کے طلباء کا احتجاج اور پولیس تشدد ،جماعت اسلامی بھی میدان میں آگئی ،بڑا مطالبہ کردیا 

  

 لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)یونیورسٹی آف مینجمنٹ ٹیکنالوجی(یو ایم ٹی) اوریونیورسٹی آف سینٹرل پنجاب( یو سی پی) کے طلبہ کی جانب سے دو روز سے آن لائن امتحانات کے لیے پر تشدداحتجاج جاری ہے تاہم اب جماعت اسلامی بھی میدان میں آگئی ہے اور طلباء پر ہونے والے تشدد کی شدید مذمت کرتے ہوئے حکومت سے بڑا مطالبہ کردیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف سے نجی یونیورسٹی کے احتجاجی طلبہ کے وفد نےزبیر صدیقی ، عمر زمران اور دیگر کی قیادت میں ملاقات کی ہے اور اِنہیں دوران احتجاج ہونے والے پر تشدد واقعات کی مکمل تفصیلات سے بھی آگاہ کیا ۔قیصر شریف نے طلباء وفد سے گفتگو میں جماعت اسلامی کی جانب سے طالب علوں پر تشدد کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پرامن احتجاج طلباء کا آئینی حق ہے، گرفتار طلباء کو فوری رہا کیا جائے، احتجاجی طلبہ  یونیورسٹیز انتظامیہ سے آن لائن امتحانات لینے کا مطالبہ کر رہے ہیں،طلبہ پر پولیس تشدد کی بجائے یونیورسٹیز پر امن طریقے سے مسلئے کاحل نکالے،نئےپاکستان میں نظام تعلیم چلانے والے اتنے غیر ذمہ دار ہیں کہ کئی دن سے طلباء سراپا احتجاج ہیں اور اُن کے کان پہ جوں تک نہیں رینگ رہی ۔اُںہوں نے کہا کہ طلبہ سے گفتگو کے ذریعہ مسلۂ کا حل نکالنے کی ضرورت ہے ،طاقت کے استعمال سے مسائل کم نہیں ہوتے،واحد حکومت ہے جس میں طلبہ ، اساتذہ، ڈاکٹرز ، سرکاری ملازمین ، کسان سبھی احتجاج کر رہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -