اکبر ایس بابر نے وزیراعظم عمران خان پر فارن فنڈنگ کے بعد ایک اور سنگین الزام عائد کردیا

اکبر ایس بابر نے وزیراعظم عمران خان پر فارن فنڈنگ کے بعد ایک اور سنگین الزام ...
اکبر ایس بابر نے وزیراعظم عمران خان پر فارن فنڈنگ کے بعد ایک اور سنگین الزام عائد کردیا

  

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)فارن فنڈنگ کیس میں درخواست گزار اور پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) کے بانی رکن  اکبر ایس بابر نے کہا ہے کہ  الیکشن کمیشن کی سکروٹنی کمیٹی کے پاس  ہمیں دستاویزات فراہم نہ کرنے کا کوئی جواز نہیں ،میرا مقابلہ عمران خان کے ساتھ نہیں بوسیدہ نظام کے خلاف ہے، اس نظام میں طاقتور کے سامنے قانون جھک جاتا ہے، آج عمران خان اس گلے سڑے نظام کی سرپرستی کر رہے ہیں۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اکبر ایس بابر کا کہنا تھا کہ   پی ٹی آئی کے 23 بینک اکاؤنٹس الیکشن کمیشن سے چھپائے گئے، الیکشن کمیشن کی سکروٹنی کمیٹی اجلاس میں پی ٹی آئی کے وکیل پیش نہیں ہوسکے اور تحریک انصاف نے کارروائی مؤخر کرنے کی درخواست کی۔انہوں نے بتایا کہ سکروٹنی کمیٹی کا آئندہ اجلاس 2 فروری کو ہوگا، ہم نے سکروٹنی کمیٹی میں پی ٹی آئی کے دستاویزات فراہم کرنے کی درخواست کی،سکروٹنی کمیٹی کے پاس دستاویزات ہمیں فراہم نہ کرنے کا کوئی جواز نہیں جبکہ پی ٹی آئی کے 23 بینک اکاؤنٹس الیکشن کمیشن سے چھپائے گئے۔

اُنہوں نے کہاکہ عمران خان نے بیان دیا کہ سکروٹنی کمیٹی کی کارروائی اوپن ہونی چاہیے،سکروٹنی کمیٹی سے اب عمران خان کا اعتراض ختم ہوچکا ہے، عمران خان کل تک جس سکروٹنی اکمیٹی کی کارروائی چیلنج کرتے تھے، آج اسی پر اعتماد کر رہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -