باڑہ،بلیک ٹاپ روڈ منظوری کے باوجودبااثر اہلکار کی وجہ سے تاخیر 

  باڑہ،بلیک ٹاپ روڈ منظوری کے باوجودبااثر اہلکار کی وجہ سے تاخیر 

  

باڑہ (نمائندہ پاکستان) باڑہ ملک دین خیل کے پسماندہ علاقے میں بہت عرصہ بعد بلیک ٹاپ روڈ کی منظوری کے بعد منصوبے میں بااثر سرکاری اہلکار ملوث ہونے کی وجہ سے تاخیر کا شکار ہے، اور اپنی ذاتی مفاد کی خاطر کروڑوں کے منصوبے کو پسماندہ علاقہ میں تول دیا جا رہا ہے، ملک دین قومی کونسل کے عہدیداروں نے باڑہ پریس کلب میں پریس کانفرنس۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ملک دین خیل سید حسن آٹاری ٹو میلہ 3 کلو میٹر روڈ کا ٹینڈر ہوچکا ہے جس کا ورک آرڈر 9 ماہ پہلے 25 فیصد بیلو ریٹ پر کمپنی کو جاری کیا گیا ہے جس میں محکمہ ہائی وے اور علاقائی سرکاری اہلکاروں کے مابین ذاتی رسہ کشی اور ٹھیکہ دار سے جوڑ توڑ کیلئے متنازعہ کیا جا رہا ہے۔ ملک دین خیل قومی کونسل کے وائس چیئرمین ہاشم خان نے وزیر اعلی خیبر پختونخوا، وزیر اعظم پاکستان اور آرمی چیف سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مزکورہ پسماندہ علاقہ میں روڈ کی تعمیر کے احکامات جاری کریں اور کرپشن کے لئے منصوبوں کو تول دینے والوں کے خلاف کاروائی کریں۔ مشترکہ پریس کانفرنس کے دیگر شرکاء میں اہلیان علاقہ اور ملک دین خیل قومی کونسل سے صحبت خان، دولت خان، عابد حسین، الحاج میاں گل، حسین خان، ریاض محمود آفریدی شامل تھے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -