محکمہ تعلیم ملازمین کی مستقلی کے بعد پے پروٹیکشن کیس میں سیکرٹری ایجوکیشن کو فوری طلب 

محکمہ تعلیم ملازمین کی مستقلی کے بعد پے پروٹیکشن کیس میں سیکرٹری ایجوکیشن کو ...
محکمہ تعلیم ملازمین کی مستقلی کے بعد پے پروٹیکشن کیس میں سیکرٹری ایجوکیشن کو فوری طلب 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے محکمہ تعلیم ملازمین کی مستقلی کے بعد پے پروٹیکشن کیس میں سیکرٹری ایجوکیشن کو فوری طلب کرلیا۔عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ کیا حکومت نے اساتذہ کو دیہاڑی دار بنا دیا ہے؟،کیا تعلیم کیساتھ یہ سلوک کرتے ہیں ؟۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں محکمہ تعلیم ملازمین کی مستقلی کے بعد پے پروٹیکشن کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس گلزاراحمد نے استفسارکیاکہ ڈیلی ویجز ملازمین کی کیا پالیسی ہے ؟۔

چیف جسٹس گلزاراحمد نے کہاکہ سیکرٹری ایجوکیشن ڈیلی ویجز ملازمین سے متعلق بتائیں،کیا یہ ڈیلی ویجز ملازمین یتیم خانہ ہیں؟،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ دس سال ملازمت کرواکر مستقل کیا گیا ہے، ایف پی ایس سی نے بھی ملازمین کو اہل قرار دیا ہے ۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ ملازمین کو نکال دیتے تو اور بات ہوتی ،اساتذہ کو ڈیلی ویجز بنیادوں پر نہیں رکھا جانا چاہیے، کیا دس سال کسی کو ڈیلی ویجز پر رکھا جا سکتا ہے ؟،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہاکہ اساتذہ کو 120 روپے روزانہ کی تنخواہ پر بھرتی کیا گیا تھا،چیف جسٹس گلزاراحمد نے کہاکہ کیا حکومت نے اساتذہ کو دیہاڑی دار بنا دیا ہے؟،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ کیا تعلیم کیساتھ یہ سلوک کرتے ہیں ؟، چیف جسٹس گلزار احمد نے سیکریٹری ایجوکیشن کو فوری طلب کرلیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -